ٹیکس ریٹرنز فائلنگ پیزا آرڈر کرنے سے زیادہ آسان ایف بی آر

45

اسلام آباد (کامرس ڈیسک) موبائل فونز کی وجہ سے سیکیورٹی کے مسائل بھی پیدا ہورہے تھے۔اس لیے موبائل فون کا غلط استعمال روکنے کیلیے اب رجسٹریشن لازمی کر دی گئی ہے جب کہ موبائل فون بلاک کرنے کا نظام پاکستان ٹیلی کام اتھارٹی( پی ٹی اے) کے پاس موجود ہے۔یکس 50 ہزار انکم ٹیکس گوشوارے صرف موبائل ایپلی کیشن کے ذریعے جمع ہونے کا مطلب ہے یہ ایپ کامیاب ہے۔فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) نے گزشتہ 8 ماہ میں موبائل فونز کی رجسٹریشن سے 7 ارب روپے ٹیکس وصول کیا جب کہ رجسٹریشن نہ کروانے پر ایف بی آر کا پراپرٹی ٹیکس کی مدت اور شرح میں کمی کا فیصلہ کر لیا ہے ۔تقریباً 6 لاکھ 75ہزار موبائل فون بلاک بھی کیے۔سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائیخزانہ کا اجلاس سینیٹر فاروق ایچ نائیک کی زیر صدارت ہوا جس میں ایف بی آر اور کسٹم حکام کی جانب سے بریفنگ دی گئی۔ایف بی آر حکام نے بتایا کہ بیرون ملک سے لائے گئے موبائل فون پر مقامی سم 2 ماہ تک استعمال ہوسکتی ہے، لیکن 2 ماہ بعد ٹیکس ادا کرنا ہوگا۔ممبر ایف بی آر کے مطابق گزشتہ 8 ماہ میں موبائل فونز کی رجسٹریشن سے 7 ارب روپے ٹیکس وصول کیا گیا جب کہ ٹیکس ادا نہ کرنے پر 6 لاکھ 75 ہزار موبائل فون بلاک کیے گئے۔ایف بی آر حکام نے سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے خزانہ کو بتایا کہ ماضی میں لوگ 10، 10 فون بغیر ٹیکس کے بیگ میں ڈال کر لے آتے تھے ،کمیٹی کے سربراہ سینیٹر فاروق ایچ نائیک کا کہنا تھا کہ ٹیکس گوشوارے جمع کرانے کے عمل کو مزید آسان بنانا چاہیے تاکہ سب لوگ باآسانی جمع کرا سکیں۔اس موقع پر سینیٹر شبلی فراز کا کہنا تھا کہ اسمگلنگ کی وجہ سے پوری معیشت متاثر ہورہی ہے، کسٹمز اسٹاف کو سب پتا ہوتا ہے کہ کیا ہو رہا ہے، 75 انچ کا اسمگل شدہ ٹی وی 60 سے 70 ہزار میں گھر میں لگا کر دیتے ہیں۔کمیٹی کو بریفنگ کے دوران کسٹمز حکام نے افغان سرحد کے راستے ایل ای ڈی ٹی وی کی اسمگلنگ کا اعتراف کر لیا۔کسٹمز حکام کا کہنا تھا کہ بلوچستان کے بعض سرحدی علاقوں سے بھی اسمگلنگ ہورہی ہے، اسمگلنگ روکنے کے لیے ہمارے پاس افرادی قوت کی قلت ہے۔کسٹمز حکام نے بتایا کہ افغان ٹرانزٹ ٹریڈ کی آڑ میں بھی اسمگلنگ ہورہی ہے۔