بلدیہ کراچی نے اپنے افسران و اہلکاروں کو بجلی کے بل خود ادا کرنے کی ہدایت کر دی

65

کراچی(صباح نیوز)بلدیہ عظمیٰ کراچی میں غیر ترقیاتی اخراجات میں کمی لانے کی میئرکراچی وسیم اختر کی پالیسی کے تحت اپریل 2019 ء سے کے الیکٹرک کے آئندہ بلوں کی ادائیگی کے لیے بجلی کے استعمال میں کفایت کے لیے کیے گئے اقدامات پر مکمل عملدرآمد کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ اس سلسلے میں میٹروپولیٹن کمشنر ڈاکٹر سید سیف الرحمن نے تمام محکمہ جاتی سربراہان کوہدایت جاری کی ہے کہ بجلی کے استعمال میں بچت کے لیے کیے جانے والے اقدامات پر عملدرآمد کو یقینی بنائیں، کے ایم سی کے دفاتر میں تمام ایئر کنڈیشنڈ صبح 11بجے کے بعد کھولے جائیں گے اور 26 ڈگری سینٹی گریڈ سے کم پر نہیں چلیں گے، دفاتر سے رخصت ہوتے وقت تمام لائٹس اور پنکھے بند کرکے جائیں گے، تمام محکمہ جاتی سربراہان کو ہدایت کی گئی ہے کہ ائر کنڈیشنڈ صرف گریڈ 18 اور اس سے زائد کے افسران کے زیر استعمال رہیں گے اور مستقبل میں روایتی لائٹس کو ایل ای ڈی لائٹس سے تبدیل کیا جائے گا، تمام محکموں کے سربراہان کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ کے ایم سی کے دفاتر اور دیگر جگہوں پر غیر قانونی کنڈوں اور کنکشن کے خلاف اقدام کریں، کے ایم سی کے بنگلوں اور رہائشی اپارٹمنٹس میں مقیم تمام افسران اور دیگر اہلکار آئندہ اپنے بجلی کے بل کی ادائیگی کے خود ذمے دار ہوں گے، تمام محکمہ جاتی سربراہان کو ہدایت جاری کردی گئی ہے کہ وہ اپنے بجلی کے بلوں کی ادائیگی یقینی بنائیں بصورت دیگر ان کے کنکشن منقطع کردیے جائیں گے، میٹروپولیٹن کمشنر ڈاکٹر سید سیف الرحمن نے افسران کو ہدایت کی ہے کہ اس کے علاوہ بھی ایسے اقدامات کیے جائیں جن سے بجلی کے استعمال میں بچت ہوسکے اور بجلی کے غیر ضروری استعمال سے محفوظ رہتے ہوئے وسائل کو ضائع ہونے سے بچایا جاسکے۔