حیدر آباد، انسداد تجاوزات کا سرکاری زمینوں پر قبضے ختم کرانے کا آغاز

58
حیدر آباد : قاسم آباد میں انسداد تجاوزات آپریشن کے دوران قابضین کی ہنگامہ آرائی کے بعد علاقے میں پولیس کی بھاری نفری تعینات ہیں
حیدر آباد : قاسم آباد میں انسداد تجاوزات آپریشن کے دوران قابضین کی ہنگامہ آرائی کے بعد علاقے میں پولیس کی بھاری نفری تعینات ہیں

 

حیدر آباد (اسٹاف رپورٹر) انسداد تجاوزات سیل کی جانب سے پولیس کی مدد سے سرکاری پارکوں‘ پلاٹوں پر قبضہ ختم کرانے کے لیے کارروائی‘ رہائشی افراد کی مزاحمت کے باعث علاقہ میدان جنگ بن گیا‘ پتھراؤ‘ لاٹھی چارج ‘ ڈی ایس پی سمیت پانچ اہلکار اور مظاہرین زخمی ‘ پندرہ افراد کو حراست میں لے لیا گیا۔ قاسم آباد کے بیکن ہاؤس اسکول ‘ شاہ لطیف کالونی‘ ودیگر علاقوں میں انسداد تجاوزات سیل نے قبضہ ختم کرانے کے لیے پولیس کی مدد سے کارروائی کی جس پر یہاں قابض لوگوں نے انہیں روکنے کی کوشش کی جس کے باعث یہاں تصادم کی صورت حال پیدا ہوگئی پولیس نے لاٹھی چارج کرتے ہوئے مظاہرین کو روکنے کی کوشش کی مظاہرین نے پولیس اور عملے پر پتھرا کیا اور لاٹھی ڈنڈوں سے مقابلہ کیاجس کے بعد پولیس کی مزید نفری طلب کرلی گئی تصادم میں ڈی ایس پی مہتاب سمیت پانچ پولیس اہلکار عبدالقیوم‘ منظور علی‘ جاوید‘ عادل اور عمران زخمی ہوگئے پولیس نے ایک درجن سے زائد علاقہ مکینوں کو گرفتار کرلیا زخمیوں کو سول اسپتال پہنچایا علاقے میں تاحال کشیدگی پائی جاتی ہے۔ اس حوالے سے اسسٹنٹ کمشنر فداحسین شورو کا کہنا ہے کہ ایچ ڈی اے کے پارک اور سرکاری زمین پر کچھ لوگوں نے قبضہ کیا ہوا ہے جس کے خلاف علی حسن جتوئی نے ہائی کورٹ میں درخواست داکل کرائی تھی جس پر عدالت نے قبضہ ختم کروانے کا حکم دیا اور اس پر انسداد تجاوزات سیل نے پولیس کی مدد سے کارروائی کی جس پر علاقہ مکینو ںنے مزاحمت کی عدالتی حکم ماننے سے انکا رکردیا اور قانون ہاتھ میں لینے کی کوشش کی جس سے امن امان کا مسئلہ پیدا ہوگیا۔ انہوں نے کہا کہ شر پسند عناصر نے پولیس اور بلدیہ کے عملے پر حملہ کیا اور ڈی ایس پی سمیت کئی پولیس اہلکار زخمی ہوگئے شاہ لطیف کالونی کے رہائشی افراد کا کہنا ہے کہ ہم یہاں چالیس سال سے رہ رہے ہیں یہ گھر ہماری ملکیت ہیں مگر یہاں علی حسن جتوئی اور انتظامیہ کے کچھ اہلکار آپس میں سازباز کرکے یہ زمین ہتھیانا چاہتے ہیں اس لیے ہمیں زبردستی بے دخل کیا جارہا ہے۔ انہوںنے الزام عائد کیا کہ پولیس نے ہمارے 15 افراد کو حراست میں لے کر غائب کردیا ہے جنہیں رہا کرکے ہمیں انصاف فراہم کیاجائے۔