سابق صدر آصف زرداری منی لانڈرنگ کیس میں گرفتار

85
اسلام آباد:آصفہ اور بلاول گرفتاری سے قبل اپنے والد آصف علی زرداری سے مل رہے ہیں
اسلام آباد:آصفہ اور بلاول گرفتاری سے قبل اپنے والد آصف علی زرداری سے مل رہے ہیں

اسلام آباد/کراچی/لاہور/کوئٹہ( نمائندگان جسارت+ اسٹاف رپورٹر)قومی احتساب بیورو نے سابق صدر مملکت اورپاکستان پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین آصف علی زرداری کوگرفتار کرلیا ۔پیر کواسلام آباد ہائی کورٹ نے جعلی بینک اکاؤنٹس اور میگا منی لانڈرنگ کیس میں سابق صدر آصف زرداری اور فریال تالپور کی درخواست ضمانت مسترد کرتے ہوئے نیب کو دونوں افراد کو گرفتار کرنے کی اجازت دے دی۔جسٹس عامر فاروق اور جسٹس محسن کیانی پر مشتمل اسلام آباد ہائی کورٹ کے بینچ نے زرداری اور فریال کی درخواست ضمانت کی سماعت کی۔ سابق صدر اور ان کی بہن فریال تالپور عدالت میں میں پیش ہوئے۔ عدالت عالیہ نے نیب پراسیکیوٹر اورفاروق ایچ نائیک کے دلائل مکمل ہونے کے بعد آصف زرداری اور فریال تالپورکی درخواست ضمانت مسترد کردی۔ عدالت نے کچھ دیر کے لیے فیصلہ محفوظ کیا جس کے بعد نیب کی استدعا منظور کرتے ہوئے دونوں ملزمان کو گرفتار کرنے کی اجازت دے دی۔ آصف زرداری 28 مارچ سے عبوری ضمانت پر تھے اور 2ماہ 12دن کے اس عرصے میں ان کی عبوری ضمانت میں 5مرتبہ توسیع کی گئی۔آصف زرداری فیصلہ آنے سے قبل ہی خطرہ بھانپ کرعدالت سے روانہ ہوگئے تھے جس پر نیب نے خصوصی ٹیمیں تشکیل دیں اور پولیس کی بھاری نفری کے ساتھ زرداری ہاؤس سے آصف زرداری کو گرفتار کرلیا تاہم فریال تالپور کو فوری گرفتار نہ کرنے کافیصلہ کیا۔پیپلزپارٹی کے شریک چیئرمین کو راولپنڈی منتقل کرکے نیب لاک اپ میں بند کردیا گیااور انہیں آج احتساب عدالت میں پیش کرکے 15روزکے لیے جسمانی ریمانڈ دینے کی منظوری لی جائے گی۔ گرفتاری سے قبل زرداری کی صدارت میں پیپلزپارٹی کے سینئر رہنماؤں کا اہم مشاورتی اجلاس ہوا جس میں ضمانت کے لیے عدالت عظمیٰ سے رجوع کا فیصلہ کیا گیا اور اس سلسلے میں قانونی ٹیم نے درخواست ضمانت بھی تیار کرلی ۔دریں اثنا نیب کی درخواست پر تشکیل دیے گئے خصوصی میڈیکل بورڈ نے آصف علی زرداری کا طبی معائنہ مکمل کرلیا جس کے تحت میڈیکل بورڈ نے انہیں صحت مند قرار دیا ہے۔ جامع چیک اپ 3رکنی میڈیکل بورڈ نے کیا جو کہ پونے 2 گھنٹے تک جاری رہا۔ ڈاکٹر آصف عرفان میڈیکل بورڈ کے سربراہ ہیں جب کہ ڈاکٹر حامد اقبال اور نیب سرجن ڈاکٹر امتیاز احمد بورڈ کا حصہ ہیں۔ٹیم نے میڈیکل سرٹیفکیٹ نیب حکام کے حوالے کر دیا جس کے مطابق آصف زرداری کا شوگر لیول، نبض کی رفتار اور بلڈ پریشر نارمل ہیں۔ آصف زرداری عارضہ قلب، کمر درد اور ذیابطیس میں مبتلا ہیں تاہم انہوں نے مطمئن انداز میں ڈاکٹرز کے سوالات کے جوابات دیے ۔ڈاکٹروں کی ٹیم طبی رپورٹ مکمل کرکے نیب کے تفتیشی افسران، ہیڈ آف پولی کلینک اور احتساب عدالت میں بھی جمع کرائے گی۔دوسری جانب زرداری کی گرفتاری کے خلاف گرفتاری کے خلاف پیپلزپارٹی کے کارکنوں نے ملک بھر میں احتجاج کیا ہے۔ کراچی میں پریس کلب کے باہر جیالوں نے احتجاجی مظاہرہ کیا جس میں پی پی پی کے مختلف ونگز سے تعلق رکھنے والے کارکنان بڑی تعداد میں شریک تھے۔ سکھر میں بھی جیالے سڑکوں پر نکل آئے اور ڈنڈا بردار کارکنوں نے زبردستی دکانیں بند کرائیں۔ پیپلزپارٹی سندھ کے ترجمان عاجز دھامرا کی قیادت میں حیدرآباد پریس کلب کے باہر احتجاج کیا گیا۔ مشتعل مظاہرین نے ٹائر جلا کر سڑک کو ٹریفک کے لیے بند کیا۔ پیپلزپارٹی کے گھر سمجھے جانے والے علاقے رتوڈیرو میں مظاہرین نے ٹائرجلا کر روڈ بلاک کیا۔ بس اسٹینڈ پر ہوائی فائرنگ بھی کی گئی۔ گھارو میں قومی شاہراہ پر ٹائر جلا کر ٹھٹھہ کراچی روڈ بلاک کردیاگیا، شکار پور میں بھی کارکنوں نے احتجاج کیا اور مشتعل مظاہرین نے ٹائر جلا کر شکارپور لاڑکانہ روڈ بلاک کیا۔لاہور میں گلاب دیوی اسپتال کے باہر ٹائر جلائے گئے، احتجاج کے باعث میٹروبسوں کی آمدورفت بھی معطل رہی۔کوئٹہ پریس کلب کے سامنے بھی احتجاج کیا گیا۔دریں اثناء پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول نے کارکنوں سے پْرامن رہنے کی اپیل کی۔ترجمان بلاول بھٹو سینیٹر مصطفٰی نواز کھوکھر نے کہا ہے کہ جیالے مشتعل نہ ہوں ضبط کا مظاہرہ کریں، تفصیلی فیصلہ آنے کے بعد پارٹی لائحہ عمل کا اعلان کرے گی۔