سندھ اسمبلی ،اپوزیشن نے پولیس ایکٹ میں ترامیم کا مسودہ مسترد کردیا

46

کراچی (اسٹاف رپورٹر) سندھ اسمبلی میں اپوزیشن جماعتوں نے پولیس ایکٹ میں ترامیم کے لیے پیپلزپارٹی کا مسودہ قانون مسترد کردیا۔ سندھ اسمبلی میں حزب اختلاف کی جماعتوں نے حکمران جماعت پیپلزپارٹی پر الزام عاید کیا ہے کہ وہ اپوزیشن کی مشاورت کا سہارا لیتے ہوئے 2002ء کے پولیس آرڈرکی بحالی کی آڑ میں بعض من پسند پولیس قوانین منظورکرانا چاہتی ہے‘ جس کا پولیس ایکٹ سے دورکا بھی تعلق نہیں ہے۔ علاوہ ازیں اپوزیشن جماعتوں نے سلیکٹ کمیٹی کے کنوینرکے وعدے کے باوجود تاحال4 روزہ سلیکٹ کمیٹی کی میٹنگ کے منٹس اپوزیشن کو نہ دیے جانے پر بھی کمیٹی کے اجلاس کا بائیکاٹ کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے۔ حزب اختلاف کی جماعتوں کا موقف ہے کہ سلیکٹ کمیٹی کے منٹس فراہم نہ کیے جانے سے حکومتی بدنیتی واضح ہوگئی ہے‘ سندھ حکومت پولیس کوصوابدیدی اختیارات کے تحت اپنے تابع کرنا چاہتی ہے۔ سندھ اسمبلی میں منعقد ہونے والے اپوزیشن جماعتوں کے اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ تمام جماعتیں کسی بھی صورت پولیس کے اختیارات پر سمجھوتا نہیں کریںگی ‘ اگر پولیس بل اپوزیشن کی مرضی اور عوامی امنگوں کے خلاف سندھ اسمبلی سے منظورکرایا گیا تو اسے عدالت میں چیلنج کیا جائے گا۔ اپوزیشن جماعتوں کے اجلاس میں قائد حزب اختلاف فردوس شمیم نقوی، پی ٹی آئی کے پارلیمانی لیڈر حلیم عادل شیخ ، ایم کیو ایم پاکستان کے محمد حسین، جی ڈی اے کے شہریار مہر اور قانونی ماہرین نے شرکت کی اور حکومتی مسودے کا جائزہ لیا۔ علاوہ ازیں سندھ اسمبلی میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے حلیم عادل شیخ کا کہنا تھا کہ پولیس ایکٹ میں حکومت سندھ نے اپوزیشن کے ساتھ دھوکا دہی کی ہے‘ 2002ء کے قانون کے نام پر بگڑا ہوا قانون لانے کی کوشش کی جارہی ہے۔ علاوہ ازیں وزیر اعلیٰ سندھ کے مشیر اطلاعات بیرسٹر مرتضیٰ وہاب نے حلیم عادل شیخ کی پریس کانفرنس پر اپنے شدید ردعمل کا اظہا ر کر تے ہو ئے کہا ہے کہمجو زہ پو لیس ایکٹ سمجھانے کے لیے ہم تحریک انصاف والوں کو مفت ٹیوشن دینے کے لیے تیار ہیں‘ پیپلز پارٹی نے ہمیشہ سندھ سے وفا دا ر ی نبھائی ہے اور سندھ کے عوام کے مسا ئل کے حل کے لیے بھر پو ر اقدا ما ت کیے ہیں‘ تحریک انصاف سندھ میں دشنام طرازی اور جھوٹ کی سیاست کو فروغ دے رہی ہے‘ حکومت سندھ اور محکمہ صحت پوری جانفشانی سے لاڑکانہ ڈویژ ن میں کام کر رہا ہے‘ اس لیے ایچ آئی وی کے معاملے پر حلیم عادل شیخ اپنی سیاست چمکانے سے باز رہیں۔ انہو ں نے بتا یا کہ محکمہ صحت جعلی بلڈ بینک کے خلاف کریک ڈائو ن کررہا ہے‘ حلیم عا دل شیخ کرپشن کی جھو ٹی کہانیاں سنا کر اپنی وفا قی حکومت اور تحریک انصاف کی نا کا می چھپانے کی کو شش کر رہے ہیں۔