جعلی شادیاں کرنیوالے چینی باشندے 14 روزہ ریمانڈ پر جیل روانہ

30

لاہور(نمائندہ جسارت )لاہور کی مقامی عدالت نے پاکستانی لڑکیوں سے جعلی شادیاں کر کے ان کا جنسی استحصال کرنے والے چینی باشندوں کے خلاف کیس کی سماعت کرتے ہوئے ملزمان کو14روزہ جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیج دیا۔ایف آئی اے نے جوڈیشل مجسٹریٹ عامر رضا کے روبرو11چینی ملزمان کو پیش کیا اور اس موقع پر ملزمان کے لیے ترجمان بھی عدالت میں پیش ہوئے۔ایف آئی اے نے جن ملزمان کو عدالت میں پیش کیا ان میں ہونگفا یان، لبنگ لیو، شونجیا لیو، لبنگ لیو، بو وانگ، جونگزی ہی، فینگ زینو یان، زینگ گینگ، شین ہونگ لی اور زوا زنگرین شامل تھے۔دوران سماعت ایف آئی اے نے عدالت کو بتایا کہ ملزمان سے مزید انکشاف اور برآمدگی کی توقع نہیں اور ساتھ ہی استدعا کی کہ ملزمان کو14روزہ جوڈیشل ریمانڈ پر جیل منتقل کردیا جائے۔ ایف آئی اے کا کہنا تھا کہ چینی باشندے پاکستانی ایجنٹس کے ساتھ مل کر پاکستانی لڑکیوں سے شادی کرتے تھے اور پاکستانی لڑکیوں سے جعلی شادیاں کرکے ان سے چین میں جسم فروشی کا دھنداکرایا جاتا ہے۔ بعدازاں عدالت نے ایف آئی اے کو27مئی کو ملزمان کے خلاف چالان پیش کرنے کا حکم دیتے ہوئے ملزمان کو14روزہ جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیج دیا۔