سراج الحق نے تھر پارکر میں الخدمت کے60 بستروں پرمشتمل اسپتال کا افتتاح کردیا

173
مٹھی: الخدمت اسپتال کی پر شکوہ عمارت، چھوٹی تصویر میں امیر جماعت اسلامی پاکستان سراج الحق اسپتال کا افتتاح کررہے ہیں
مٹھی: الخدمت اسپتال کی پر شکوہ عمارت، چھوٹی تصویر میں امیر جماعت اسلامی پاکستان سراج الحق اسپتال کا افتتاح کررہے ہیں

کراچی/مٹھی(اسٹاف رپورٹر)امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ ملک میں صحیح اور بلاتفریق احتساب ہوا تو حکومتی کابینہ سمیت پارلیمنٹ میں موجود ارکان کی اکثریت جیلوں میں ہوگی، اسلامی انقلاب کے بغیر غربت وافلاس سے نجات سمیت تھرپارکر کے عوام کی قسمت تبدیل نہیں ہوسکتی ، وزیراعظم ودیگر سیاسی جماعتوں نے وعدے کیے مگر الخدمت نے عملی کام کرکے تھرپارکر کے عوام کو الخدمت اسپتال کا ایک بہترین تحفہ دیا،الخدمت اسپتال میں ڈاکٹر ودیگر عملے کا خدمت خلق کا جذبہ اور تھرکے عوام کی خوشیاں دیکھ کردلی خوشی اور قلبی سکون ملا، 100 فیصد مفت علاج اور مریضوں کو بہترین سہولیات کی فراہمی منتظمین کا بہترین کارنامہ ہے ، جماعت اسلامی اور الخدمت بلاتفریق اور انسانیت کی خدمت کے جذبے کے ساتھ تھر سمیت سندھ کے عوام کی خدمت کرتی رہے گی، الخدمت اسپتال تھرپارکرسمیت پورے ملک میں اپنی مثال آپ ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے مٹھی میں 60 بستروں پر مشتمل اسپتال کا دورہ اور اس کی افتتاحی تقریب سے خطاب کے دوران کیا،قبل ازیں امیر جماعت کا مٹھی پہنچنے پر ضلعی امیر میر محمد بلیدی کی قیادت میں کارکنان نے شاندار استقبال کیا۔ تقریب سے مرکزی نائب امیر اسداللہ بھٹو،سندھ کے امیر محمد حسین محنتی، سابق امیر ڈاکٹر معراج الہدیٰ صدیقی، الخدمت فاؤنڈیشن پاکستان کے صدرعبدالشکور، پروجیکٹ ڈائریکٹر اعجاز اللہ خان، ضلعی امیر میر محمد بلیدی نے بھی خطاب کیا۔ اس موقع پر قیم صوبہ کاشف سعید شیخ، نائب امرا حافظ نصراللہ عزیز،عبدالغفار عمر ،پروفیسر نظام الدین میمن اور سیکرٹری اطلاعات مجاہد چناسمیت دیگر شخصیات بھی موجود تھیں۔ سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ تھر کے لوگ باصلاحیت اور پرامن لوگ ہیں، اللہ نے ان کو جن نعمتوں سے نوازا ہے میں مستقبل میں ایک روشن تھر دیکھ رہا ہوں ۔ایک سوال کے جواب میں ان کا کہنا تھا کہ حکومت کی کوئی کارکردگی نہیں تو تبصرہ کس چیز کا، موجود ہ حکومت کو سیکھنے کے لیے 5 سال لگ جائیں گے، سندھ باب الاسلام ہے تبدیلی اور خوشحالی صرف اللہ کے دین سے ہی آئے گی۔جماعت اسلامی پاکستان کے مرکزی نائب امیر اسداللہ بھٹو نے کہا کہ ایک لاکھ کے قریب مریضوں کا100 فیصد مفت علاج سندھ حکومت کے لیے چیلنج کی حیثیت رکھتا ہے، حکمران اور سیاسی جماعتیں صرف سرکاری طور پر اعلانات کرتی ہیں جبکہ جماعت اسلامی نے اپنے طور پر ایک بڑا اسپتال تھر کے لوگوں کے لیے قائم کرکے انسانیت کی اعلیٰ مثال قائم کی ہے ۔ اس موقع پر جماعت اسلامی سندھ کے امیر محمد حسین محنتی نے کہا کہ انسانیت کی خدمت ایک بہت بڑا کام ہے ،جماعت اسلامی نے الخدمت اسپتال سے پہلے پورے تھر میں پیاسے عوام کے لیے کنووں اور بچوں کو تعلیم دینے کے لیے اسکولوں کا جال بچھایا ہے، جماعت اسلامی ایک عوامی اور انقلابی جماعت ہے جو نظام بدلنے کی بات کرتی ہے، پاکستان کے 156اضلاع میں تھرپارکر سب سے زیادہ پسماندہ ضلع ہے ،جماعت اسلامی انسانیت کی خدمت کے جذبے کے تحت بلا تفریق خدمت کے ساتھ تھر کے عوام کی خدمت کرکے قسمت تبدیل کرے گی، تھر کو ترقی کا نشان بنائیں گے،بھارت نے پاکستان کی طرف میلی آنکھ سے دیکھا تو پوری قوم متحد ہوکر منہ توڑ جواب دے گی، الخدمت فاؤنڈیشن پاکستان کے مرکزی صدر عبدالشکور نے کہا کہ الخدمت اسپتال کے قیام میں نعمت اللہ خان کی کاوشیں اور کردار ناقابل فراموش ہے،یہ عوام کے تعاون سے اور عوام کے لیے بنایا گیا ہے، انہوں نے اہل خیر کو متوجہ کرتے ہوئے کہا کہ اس پروجیکٹ کو تھر کے عوام کی فلاح وبہبود کے لیے صاحب ثروت لوگ دل کھول کر تعاون کریں۔ پروجیکٹ ڈائریکٹر اعجاز اللہ خان نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ابتدا میں مخیر حضرات کے تعاون سے 8 کروڑ سے یہ منصوبہ شروع کیا جس میں گزشتہ سال 70 ہزار مریضوں نے استفادہ کیا جبکہ 19 ہزار افراد کے مفت لیبارٹری ٹیسٹ ہوئے، اس اسپتال سے تھرپارکر کے علاوہ عمرکوٹ، بدین، میرپور خاص اضلاع کے لوگوں نے بھی علاج معالجے کی سہولیات حاصل کیں۔قبل ازیں امیر جماعت اسلامی نے بدین میں فلاحی ادارے ’’رفیق فاؤنڈیشن ‘‘ کے علاقائی دفتر کا افتتاح بھی کیا۔ا س موقع پر فاؤنڈیشن کے ذمے دار محسن رفیق اور محمد موسیٰ ملاح سمیت دیگر بھی موجود تھے۔