پاکستان اورچین کے درمیان15 معاہدوں پر دستخط 

119
بیجنگ: پاکستان اور چین کے وزرا معاہدوں پر دستخط کررہے ہیں جبکہ دونوں ملکون کے وزرائے اعظم بھی موجود ہیں
بیجنگ: پاکستان اور چین کے وزرا معاہدوں پر دستخط کررہے ہیں جبکہ دونوں ملکون کے وزرائے اعظم بھی موجود ہیں

بیجنگ (خبر ایجنسیاں)پاکستان اور چین کے درمیان دوطرفہ تعاون کے 15معاہدوں اور مفاہمتی یادداشتوں پر دستخط کیے ہیں جبکہ چینی نائب وزیر خارجہ کونگ زوانیو نے کہا کہ پاک چین اقتصادی راہداری منصوبے میں کوئی تبدیلی نہیں کی جائے گی ،سی پیک کی بدولت عوام کے دیرینہ مسائل حل اور ان کی زندگیوں میں مثبت تبدیلی رونما ہوگی۔معاہدوں اور مفاہمتی یادداشتوں پر دستخط وفود کی سطح پر ہونے والے مذاکرات کے دوران کیے گئے، وزیر اعظم عمران خان نے پاکستانی وفد جبکہ ان کے ہم منصب لی کی چیانگ نے چینی وفد کی قیادت کی۔پاکستانی وفد میں وزیر خارجہ شاہ محمودقریشی، وزیر خزانہ اسد عمر، وزیر اعلیٰ بلوچستان جام کمال، مشیر تجارت عبدالرزاق داؤد اور وفاقی وزرا خسرو بختیار، شیخ رشید اور علی زیدی بھی موجود تھے۔دوسری جانب چینی وزیر خارجہ وانگ ژی سمیت چینی کابینہ کے اراکین بھی مذاکرات کے دوران چینی وفد کا حصہ تھے۔دونوں ممالک کے درمیان دوطرفہ تعاون کے 15 معاہدوں اور مفاہمت کی یادداشتوں پر دستخط کیے گئے۔دونوں ممالک کے درمیان جن معاہدوں پر دستخط کیے گئے ان میں چین کی اکیڈمی آف سائنسز اور پاکستان میٹرولوجیکل ڈیپارٹمنٹ، ہائر ایجوکیشن کمیشن پاکستان اور چین کی سائنس اکیڈمی، اسلام آباد پولیس اور بیجنگ پولیس کے درمیان تعاون، زراعت اور اقتصادی و تکنیکی تعاون سے متعلق معاہدے شامل ہیں۔اسی طرح دونوں ممالک کے درمیان مفاہمت کی جن یادداشتوں پر دستخط ہوئے ان میں پاک۔ چین وزرائے خارجہ کی سطح کے تزویراتی مذاکرات، پاکستان سے غربت کے خاتمے اور جنگلات، ارضیات سائنس اور الیکٹرونکس مواد کے تبادلے سے متعلق مفاہمت کی یادداشتیں شامل ہیں۔ ملاقات سے قبل وزیر اعظم عمران خان کو گریٹ ہال میں گارڈ آف آنر پیش کیا گیا، چینی مسلح افواج کے دستے نے وزیراعظم کو سلامی پیش کی۔ اس موقع پر دونوں ممالک کے قومی ترانوں کی دھنیں بھی بجائی گئیں۔چینی وزیرِ اعظم لی کی چیانگ نے وزیراعظم عمران خان کے دورہ بیجنگ کا خیرمقدم کیا، دونوں ممالک کے وزرائے اعظم نے گرم جوشی سے مصافحہ کیا۔ذرائع کے مطابق پاک۔چین وزرائے اعظم ملاقات اور مذاکرات میں دوطرفہ معاشی، تجارتی اور اسٹرٹیجک تعلقات مضبوط بنانے پر اتفاق ہوا۔اس موقع پر وزیراعظم عمران خان نے چینی ہم منصب کو سی پیک سے متعلق اپنی ترجیحات، حکومت کی معاشی اصلاحات اور ضروریات سے متعلق بھی آگاہ کیا۔چینی وزیراعظم کا کہنا تھا کہ سی پیک پاکستان اور چین کے لیے ہی نہیں بلکہ پورے خطے کے لیے گیم چینجر ہے۔ان کا مزید کہنا تھا کہ پاکستان کے ساتھ دیرینہ تعلقات ہیں اور چین پاکستان کے ساتھ کھڑا ہے۔ذرائع کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے اپنے چینی ہم منصب کو دورہ پاکستان کی دعوت بھی دی جو انہوں نے قبول کرلی۔ذرائع کا کہنا ہے کہ چین کے وزیراعظم جلد پاکستان کا دورہ کریں گے اور اس حوالے سے سفارتی چینلز سے شیڈول جلد ترتیب دیے جانے پر اتفاق ہوا ہے۔اس سے قبل وزیراعظم عمران خان تیانمن اسکوائر پہنچے تھے، جہاں انہوں نے پیپلز ہیروز کی یادگار پر پھول چڑھائے ۔ علاوہ ازیں وزیراعظم عمران خان سے چین کی بڑی صنعتکار کمپنیوں کے سربراہوں نے الگ الگ ملاقاتیں کیں جس میں انہوں نے کمپنیوں کو پاکستان میں سرمایہ کاری کی دعوت دی۔وزیراعظم عمران خان سے چیئرمین پاور چائنا گروپ یان ژی یانگ نے ملاقات کی جس میں پاکستان میں توانائی ضروریات، سی پیک کے تحت جاری بجلی منصوبوں پر گفتگو کی گئی۔چینی پاور گروپ کمپنی نے جلد پاکستان کے دورے کا عندیہ بھی دیا ہے۔چیئرمین پاور چائنا گروپ کا کہنا تھا کہ پاکستان میں توانائی کی ضروریات پوری کرنے کے لیے بذریعہ سرمایہ کاری کردار ادا کریں گے۔وزیراعظم نے توانائی شعبے میں چائنا زی یوبا گروپ کو سرمایہ کاری کی دعوت بھی دی۔اس کے علاوہ وزیراعظم عمران خان سے چائنا رینبو انٹرنیشنل انویسٹمنٹ کمپنی کی چیئرمین لی ڈیکین، چیئرمین چائنا ریلویز کنسٹرکشن کارپوریشن اور چیئرمین بینک آف چائنا گروپ نے بھی علیحدہ علیحدہ ملاقاتیں کیں۔ وزیراعظم نے ہواوے کمپنی مڈل ایسٹ ریجن کے صدر چارلس یانگ کو ملاقات میں پاکستان میں سرمایہ کاری کے مواقع اور انسانی وسائل کی دستیابی سے آگاہ کیا۔بعد ازاں وزیراعظم کی چینی کمپنیوں کے سربراہوں سے ملاقات کا اعلامیہ بھی جاری کیا گیا۔اعلامیے میں بتایا گیا کہ عمران خان نے چینی کمپنیوں کے سربراہان کو حکومت کے سماجی و معاشی ایجنڈے سے آگاہ کیا جبکہ سی پیک کے تحت جاری منصوبوں پر اطمینان کا اظہار کیا گیا۔ وزیراعظم نے چینی کمپنیوں کے سی پیک سمیت کئی بزنس وینچرز میں شمولیت کو سراہا جبکہ چینی کمپنیوں کے سربراہوں نے بھی وزیراعظم کے وژن کو سراہا۔اعلامیے کے مطابق چینی کمپنیوں نے پاکستان میں توانائی، تعمیرات اور دیگر شعبوں میں مزید سرمایہ کاری کا اعلان کیا۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ