عدلیہ پر دباؤ ڈال کر مرضی کے فیصلے کرانا خطرناک ہوگا،خورشید شاہ

51

سکھر(آن لائن)پاکستان پیپلزپارٹی کے مرکزی رہنما سید خورشید احمد شاہ نے آئین پر عمل کو ملکی مسائل کا حل قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ ملک میں آئین کی بالادستی اہم ہے اور اسی کی پاسداری کے لیے بینظیر بھٹو شہید نے جان دی، ملک میں آئین نہ ہونے کی وجہ سے بنگلہ دیش بنا اور آج صورتحال کو پھر اسی طرف لے جایا جارہاہے اور صورتحال انتہائی خطرناک اور خوفناک بنتی جارہی ہے ان خیالات کا اظہار انہوں نے سکھر میں سندھ ہائی کورٹ بار سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔انہوں نے مزید کہا کہ میں نے پہلے ہی دن کہا تھا کہ حکومت کو آئی ایم ایف کے پاس جانا پڑے گا لیکن عمران خان کہتے تھے کہ وہ خودکشی کرلیں گے لیکن آئی ایم ایف کے پاس نہیں جائیں گے ان کے اس بیان کا سوشل میڈیا پر مذاق اڑایا جارہا ہے اور ان کو مشورہ دیا جارہا ہے کہ وہ بدھ کو خودکشی کریں تاکہ تین دن سوگ ہو اور پھر مزید دو دن چھٹی بھی ہو اور عیاشی بھی، ان کے اس طرح کے غیر ذمہ دارانہ بیانات سے دنیا میں پاکستان کے امیج کونقصان پہنچ رہا ہے ان کا کہنا تھا کہ ملک کی معیشت تباہ ہوچکی ہے، ڈالر ایک سو پنتیس روپے تک جاپہنچا امپورٹ ایکسپورٹ کم ہوگئی ہے اور اسٹاک ایکسچینج ڈاؤن ہوچکا ہے اور یہ معیشت بھینسیں اور گاڑیاں بیچنے یا پی ایم ہاؤس کو یونیورسٹی بنانے سے بہتر نہیں ہوگی۔انہوں نے کہا کہ عمران خان کے پاس 70 فیصد پرویز مشرف کی ٹیم ہے جن کی سوچ بھی آمرانہ ہے، عدلیہ پر دباؤ ڈال کر مرضی کے فیصلے کرائے جائیں گے تو یہ خطرناک ثابت ہوں گے۔ پارلیمنٹ کی بالادستی ختم ہوتی نظر آرہی ہے لیکن ہم پھر بھی کوشش کررہے ہیں کہ حکومت اپنی آئینی مدت پوری کرے۔پیپلز پارٹی کے مرکزی رہنما کا کہنا تھا کہ معیشت پرخطرناک حد تک دباؤ ہے، دو ماہ میں اربوں روپے کا نقصان ہوا، لوگ کنگال ہوگئے۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ