خسرہ کی بیماری سے بچوں کو محفوظ رکھنا قومی اور انسانی فریضہ ہے، علما

28

بدین (نمائندہ جسارت) بدین کے علما کرام مختلف مساجدو مدارس کے خطیب اور ائمہ مساجد نے کہا ہے کہ صحت مند معاشرہ ملک و قوم کی ترقی، خوشحالی کے علاوہ ہر مشکل چیلنج کے مقابلے کا باعث بنتا ہے، بیمار انسان معاشرے پر بوجھ بنتا ہے۔ بدین کے معروف علما کرام اور خطیب مولانا حافظ صوفی نور احمد میمن، مولانا حبیب اللہ نعیمی، حافظ عبدالغفار کھوسو، مولانا گلزار احمد جمالی، قاری جاوید احمدانی، مولانا بہادر علی میمن اور دیگر نے بدین پریس کلب اور محکمہ صحت کی جانب سے بدین پریس کلب میں خسرہ وبا کی بیماری سے بچاؤ کی ویکسین مہم کو کامیاب بنانے کے لیے منعقد پروگرام میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ خسرہ کی خطرناک بیماری سے بچوں کو محفوظ رکھنا ایک قومی اور انسانی فریضہ ہے، بچوں کو اس بیماری سے محفوظ رکھنے کے لیے عوام کو آگاہی دیں کہ وہ اپنے بچوں کو بہر صورت خسرہ کی ویکسین ٹیکا لگوائیں۔ اس موقع پر ڈسٹرکٹ آفیسر محکمہ صحت ڈاکٹر محبوب علی، ڈاکٹر ممتاز چانڈیو اور دیگر نے کہا کہ 15 سے 27 اکتوبر 2018ء تک ضلعی سطح خسرہ کی بیماری پر قابو پانے کے لیے مہم چلائی جارہی ہے، جس میں 9 ماہ سے پانچ سال کی عمر کے بچوں کوخسرہ سے بچاؤ کے ٹیکے لگائے جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ علما کرام کے علاوہ شہریوں، صحافیوں، این جی اوز، سول سوسائٹی اور منتخب نمائندوں کو بھی اس مہم میں بھرپور طریقے سے تعاون کر نا چاہیے تا کہ ایسی خطرناک بیماری سے معصوم بچوں کو بچایا جاسکے۔ انہوں نے مزید کہا کہ جس بچے کو خسرے کی بیماری ہوتی ہے اور اسے ٹیکا نہیں لگایا جاتا تو اس بچے کو مزید بیماریوں میں مبتلا ہونے کا خدشہ ہوتا ہے۔ اس لیے بچوں کے والدین کو چاہیے کے وہ اپنے 9 ماہ سے 5 سال کی عمر کے بچوں کو خسرہ سے بچاؤ کے ٹیکے ضرور لگوائیں۔ اس موقع پر بدین پریس کلب کے صدر تنویر احمد آرائیں، شوکت میمن اور دیگر نے بھی اظہار خیال کیا۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ