مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج کی درندگی‘8نوجوان شہید‘ گن شپ ہیلی کاپٹروں کا استعمال 

71

سری نگر (اے پی پی)مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج نے ریاستی دہشت گردی کی تازہ کارروائیوں کے دوران جمعرات کو سوپور، کپواڑہ اور ریاسی کے علاقوں میں 8نوجوانوں کو شہید کردیا جبکہ کارروائیوں میں گن شپ ہیلی کاپٹروں کا بھی استعمال کیا گیا۔کشمیرمیڈیا سروس کے مطابق قابض فوج نے 2نوجوانوں کوسوپور، 3 کو کپواڑہ اور3 کوریاسی کے علاقے جھجر کوٹلی میں شہید کیا۔ تمام نوجوانوں کو فوج نے تلاشی اور محاصرے کی کارروائیوں کے دوران شہید کیا۔ بھارتی فوجیوں کو جھجر کوٹلی میں کارروائی کے دوران جنگی ہیلی کاپٹر کی مدد بھی حاصل تھی ۔ 2 مختلف مقامات پر ایک افسر سمیت 8 بھارتی فوجی زخمی ہو گئے ۔ انتظامیہ نے مذکورہ علاقوں میں پابندیاں عائد اور انٹرنیٹ سروس معطل کر دی جبکہ تعلیمی ادارے بند کردیے۔مشترکہ حریت قیادت نے اقوامِ متحدہ کے انسانی حقوق کمیشن کی ہائی کمشنر میچیلی بیچھی لیٹ کے بیان کو بھارتی قابض فورسز کے ہاتھوں انسانی حقوق کی سنگین پامالیوں کا نشانہ بننے والے جموں وکشمیر کے عوام کے لیے امید کی ایک کرن قراردیا ہے ۔ حریت قائدین نے سرینگر سے جاری ایک بیان میں مختلف جیلوں میں سیاسی نظربندوں کے ساتھ روا کھے جانے والے سلوک پر بھی شدید تشویش ظاہر کی ہے ۔ادھر بھارتی فوج کے ہاتھوں منگل کو 2 نوجوانوں کی شہادت پر شمالی کشمیر کے علاقوں لنگیٹ،ہندواڑہ اور زینہ گیر میں دوسرے دن بھی مکمل ہڑتال کی گئی۔سوپور کے عوام بھارتی فورسز کے ہاتھوں حریت کارکن حکیم الرحمن کے بہیمانہ قتل اور دیگر شہادتوں پر کل ہڑتال کریں گے۔ ہڑتال کی کال مشترکہ حریت قیادت نے دی ہے۔ دوسری جانب بھارتی پولیس کی زیر حراست کشمیری صحافی آصف سلطان کی رہائی کے لیے ’’کشمیر جرنلسٹ ایسوسی ایشن نے سرینگر میں ایک احتجاجی مارچ کیا۔ شرکا نے گرفتار صحافی کی فوری رہائی کے حق میں نعرے لگائے۔صحافی تنظیم کے ارکان نے اس موقع پر کہاکہ آئی ایف جے، سید پی جے، آر ایس ایف جیسی عالمی صحافتی تنظیموں کے علاوہ انسانی حقوق کی عالمی تنظیم ایمنسٹی انٹرنیشنل نے بھی آصف سلطان کی گرفتاری پر سخت تشویش کا اظہار کرتے ہوئے ان کی فوری رہائی کا مطالبہ کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ قابض انتظامیہ صحافیوں کے کام میں بے جا روڑے اٹکا۔ ادھر کل جماعتی حریت کانفرنس کے غیر قانونی طورپر نظربند سینئر رہنما اور مسلم لیگ جموں وکشمیر کے چیئرمین مسرت عالم بٹ کو ان کے خلاف کوٹھی باغ پولیس اسٹیشن میں درج ایک جھوٹے مقدمے کے سلسلے میں چیف جوڈیشل مجسٹریٹ سرینگر کی عدالت میں پیش کیاگیا ۔ کشمیرمیڈیاسروس کے مطابق مسرت عالم بٹ کو مقدمے کی سماعت کے سلسلے میں جموں کی کوٹ بھلوال جیل سے سرینگر منتقل کیاگیا اور سی جے ایم کی عدالت میں پیش کیاگیا ۔دلائل سننے کے بعد جج نے مقدمے کی آئندہ سماعت 24ستمبر تک ملتوی کردی جس کے بعد مسرت عالم بٹ کو واپس کورٹ بھلوال جیل منتقل کردیا گیا۔مسلم لیگ کے نائب چیئرمین محمد یوسف میر کو بھی شوپیاں کی عدالت میں پیش کیا گیا ۔ عدالت میں پیشی کے بعد انہیں دوبارہ سرینگر سینٹرل جیل منتقل کردیا گیا۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ

جواب چھوڑ دیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.