ختم نبوت ترمیم پر تمام جماعتوں سے مشاورت کا حکومتی دعویٰ جھوٹ ہے‘عمران خان

84
اسلام آباد: چیئرمین تحریک انصاف عمران خان پریس کانفرنس کررہے ہیں
اسلام آباد: چیئرمین تحریک انصاف عمران خان پریس کانفرنس کررہے ہیں

اسلام آباد (خبر ایجنسیاں) پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ ختم نبوت ترمیم پر تمام جماعتوں سے مشاورت کا حکومتی دعویٰ جھوٹ ہے‘ کیا تبدیلی انٹرنیشنل لابی کو خوش کرنے کے لیے کی گئی؟ ذمے داروں کا تعین ہوجائے تو معاملہ حل ہوجائے گا‘ نواز شریف خود کو بادشاہ سمجھتے ہیں‘ فوج فیض آباد دھرنے میں سمجھوتا نہ کراتی تو انتشار پھیلتا‘ حکومتی آپریشن کے بعد پارٹی کارکنان بھی دھرنے میں شریک ہونا چاہتے تھے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے بدھ کوبنی گالہ میں پریس کانفرنس سے خطاب اور سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے پیغام میں کیا۔ انہوں نے کہا کہ نواز شریف خود کو بادشاہ سمجھتے ہیں ان کی
خواہش ہے کہ شریف مافیاکو قانونی حیثیت مل جائے تاکہ وہ کرپشن کر سکے‘ نواز شریف3 بار وزیراعظم بنے مگر انہیں یہ نہیں معلوم کہ عوامی عہدیدار جوابدہ ہوتا ہے‘ اثاثوں کی وضاحت دینی ہوتی ہے‘ آمدن سے زائد اخراجات کے وسائل بتانا ہوتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ فیض آباد میں حکومتی آپریشن کے بعد ملک بھر سے پی ٹی آئی کارکنان دھرنے میں شریک ہونا چاہتے تھے‘ مظاہرین سے اگر فوج معاہدہ نہ کراتی تو بڑا انتشار آنے والا تھا‘ حلف نامے میں ترمیم کس کو خوش کرنے کے لیے کی گئی ‘ ذمے داروں کا تعین ہوجائے تو معاملہ جلد حل ہوجائے گا‘ عوام کو سمجھ جانا چاہیے جو قطری عدالت عظمیٰ کے طلب کرنے پرنہیں آیا وہ اب کیوں آگیا۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعظم شاہد خاقان عباسی سمیت تمام وزرا صرف نااہل وزیراعظم کی کرپشن کو بچانے میں لگے ہوئے ہیں‘ کرپشن کرنے والے مجرم کو 40 گاڑیوں کا پروٹوکول دیا جارہا ہے‘ وزیر خزانہ اسحق ڈار نواز شریف کے فرنٹ مین ہیں‘ ان کے پاس شریف خاندان کی کرپشن کی تفصیلات موجود ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حلف نامے میں ترمیم پر کہا گیا کہ تمام جماعتیں اس میں شریک تھیں یہ بہت بڑا جھوٹ بولا گیا ہے‘ 2 دفعہ سابق وزیر قانون زاہد حامد نے اسمبلی میں کہا کہ حلف نامے میں کوئی ترمیم نہیں ہوئی‘ جب یہ معاملہ سامنے آیا تو مسلم لیگ کے رہنما چھپ گئے‘ ترامیم کے پیچھے چھپے افراد کے نام جلد سامنے لائے جائیں۔ عمران خان نے کہا کہ جب پتا چلا کہ حکومت اور دھرنا مظاہرین میں معاہدہ ہوگیا تو 2 رکعت شکرانے کے نفل پڑھے ۔ انہوں نے کہا کہ پرامن احتجاج سب کا حق ہے‘ ڈنڈے مارنا کوئی طریقہ نہیں ہے ‘میرے گھر کے باہر بھی کے پی کے کے لوگوں نے بہت دھرنے دیے ہیں مگر میں نے انہیں مطمئن کیا ہے۔