اندرون سندھ مستقل نہ کیے جانے کیخلاف این ٹی ایس پاس اساتذہ کا احتجاج

305
ٹنڈومحمد خان ،این ٹی ایس پاس اساتذہ ملازمتیں مستقل نہ کرنے کے خلاف پریس کلب کے سامنے احتجاج کررہے ہیں
ٹنڈومحمد خان ،این ٹی ایس پاس اساتذہ ملازمتیں مستقل نہ کرنے کے خلاف پریس کلب کے سامنے احتجاج کررہے ہیں

ٹنڈو محمد خان، ماتلی (نمائندگان جسارت) اندرون سندھ این ٹی ایس پاس اساتذہ کا مستقل نہ کیے جانے کیخلاف احتجاج اور ریلی۔ این ٹی ایس پاس اساتذہ کا مستقل نہ کیے جانے کیخلاف پر یس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ، سخت نعرے بازی، وزیر تعلیم کی جانب سے این ٹی ایس پاس اساتذہ سے دوباہ ٹیسٹ لینے والے بیا ن کی پر زور الفاظ میں مذمت کرتے ہیں۔ جلد از جلد این ٹی ایس پاس اساتذہ کو مستقل کیے جانے کا نوٹیفکیشن جاری کیا جائے، مظاہرین کا مطالبہ۔ این ٹی ایس پاس اساتذہ نے مستقل نہ کیے جانے کیخلاف پرائمری ٹیچر ز ایسوسی ایشن کے مرکزی صدر حاجی شفیع سٹھیو، سلمان سومرو، مشتاق علی وگھامل، نصراللہ مگسی، غلام حیدر سموں اور محمد حسن تیغانی ودیگر کی قیا دت میں پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کیا اور سخت نعر ے بازی کی۔ اس مو قع پر مظاہر ین نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہم نے این ٹی ایس کے ٹیسٹ پاس کر کے نو کر ی حاصل کی اور گزشتہ تین سال سے اپنی ڈیوٹیاں سرانجام دے رہے ہیں، ہمیں مستقل کرنے کے بجائے وزیر تعلیم کا بیان آ یا ہے کہ این ٹی ایس پاس اساتذہ کو مستقل نہیں کیا جائے گا اور ان سے دوبارہ ٹیسٹ لیے جائیں گے، جو کہ میر ٹ کا قتل عام ہے۔ مظاہرین نے پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول زرداری، وزیر اعلیٰ سندھ سے مطالبہ کیا ہے کہ این ٹی ایس کا ٹیسٹ پاس کر کے نو کر یا ں حاصل کر نے والے نوجوانوں کے ساتھ ہونے والی نا انصافی کا نو ٹس لیا جائے اور این ٹی ایس پاس کر کے نوکری حاصل کر نے والے اساتذہ کو فوری طور پر مستقل کرنے کا نوٹیفکیشن جاری کیا جائے۔ ماتلی میں این ٹی ایس پاس اساتذہ نے3سال کا نٹریکٹ مکمل ہونے اور پھر دوبارہ ازسرنو ٹیسٹ لیے جانے کے خلاف احتجاجی ریلی نکال کر پریس کلب کے سامنے محکمہ تعلیم کی پالیسیوں کے خلاف شدید نعرے بازی کی۔ اس موقع پر این ٹی ایس پاس اساتذہ کی نمائندگی کرتے ہوئے علی نواز پنہور، علی احمد شاہ، رضوان رند اور مسعود نظامانی سمیت دیگر نے صحافیوں کو بتایا کہ ہمارا تین سالہ کنٹریکٹ پورا ہونے کے بعد سندھ حکومت نے تین ماہ کا اضافہ کرکے ازسر نو امتحان لینے کا اعلان کرکے تعلیم دشمن پالیسی واضح کی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہم نے پہلے ہی این ٹی ایس ٹیسٹ پاس کیا جبکہ تین سال گزرنے کے بعد دوبارہ سے ٹیسٹ لینا تعلیم دشمن پالیسی ہے، حکومت کو اپنی پالیسی تبدیل کرنا پڑے گی۔ انہوں نے مزید کہا کہ اساتذہ اس پالیسی کیخلاف سخت احتجاج کریں گے۔