پاکستان کے جرات مندانہ اقدامات تک بھارت کشمیر میں مظالم سے باز نہیں آئے گا، سراج الحق

174
امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق ساہیوال میں پریس کانفرنس کر ر ہے ہیں
امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق ساہیوال میں پریس کانفرنس کر ر ہے ہیں

لاہور ( نمائندہ جسارت )امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہاہے کہ بھارتی فوج روزانہ نہتے کشمیری نوجوانوں کا قتل عام کر کے ان کی نسل کشی کر رہی ہے ، ایک ایک دن میں آٹھ نوجوانوں کا قتل معمولی بات نہیں ۔ تحریک آزادی کو طاقت کے ذریعے کچلنا اور اسے دہشتگردی قرار دینا بین الاقوامی قوانین کی خلاف ورزی ہے، اس کے خلاف عالمی برادری میں بھر پور آواز اٹھائی جائے ۔ کشمیر متنازع علاقہ ہے لیکن ہماری حکومت چپ سادھے بیٹھی ہے ۔ جب
تک حکومت پوری جرأت کے ساتھ کشمیریوں کی سرپرستی نہیں کرے گی ، بھارت ظلم سے باز آئے گا نہ عالمی برادری اس ظلم و جبر کے خلاف آواز اٹھائے گی ۔ بھارت آبی دہشتگردی کے ذریعے پاکستان کو بنجر بنانے پر تلاہواہے ۔ حکومت ڈیم بنانے کے ساتھ ساتھ بھارت کی آبی جارحیت کے سدباب کے لیے بھی ٹھوس اقدامات کرے ۔ پاکستان کے لیے پانی کے ذخائر کی تعمیر ناگزیر ہو چکی ہے ۔پوری قوم ڈیموں کی تعمیر چاہتی ہے ۔ ڈیموں کو متنازعہ بنانے والے ملک و قوم کے خیر خواہ نہیں ۔ حکومت پوری دلجمعی کے ساتھ آگے بڑھے اور ڈیموں کی تعمیر کا آغاز کردے ۔ جماعت اسلامی ڈیموں کی تعمیر کے معاملے میں حکومت کی مکمل تائید و حمایت کرے گی ۔ ان خیالات کااظہار انہوں نے ساہیوال میں اجتماع ارکان سے خطاب اور بعد ازاں میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔ اس موقع پر سیکرٹری جنرل جماعت اسلامی پاکستان لیاقت بلوچ ، ڈپٹی سیکرٹری جنرل اظہر اقبال حسن ، جماعت اسلامی پنجاب کے امیر میاں مقصود احمد اور صوبائی جنرل سیکرٹری بلال قدر ت بٹ بھی موجودتھے ۔ سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ ہم چاہتے ہیں کہ قومی ادارے مضبوط ہوں ۔ سیاست اور جمہوریت خاندانوں کے گرد گھومتی رہی تو ملک و قوم کو اس کا کوئی فائدہ نہیں ہوگا ۔ عوام سیاست اور جمہوریت کو تب مضبوط سمجھیں گے جب عام لوگ ایوانوں میں پہنچیں گے ۔ عوام کی تقدیر بھی اسی وقت بدلے گی جب باصلاحیت نوجوان اسمبلیوں میں آئیں گے اور سیاست وڈیروں ، سرمایہ داروں اور جاگیرداروں کے چنگل سے آزاد ہوگی ۔سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ کشمیر کا مسئلہ حکومت کی بے انتہاتوجہ کا مستحق ہے۔ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج کی وحشت اور درندگی انتہا پر ہے کشمیرکی حریت قیادت اس وقت جیلوں میں بند ہے۔ کشمیر کے چوک اور چوراہے شہداء کے خون سے لہورنگ ہوچکے ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ دنیا کشمیریوں کا اس وقت ساتھ دے گی جب حکومت پاکستان پوری جرأت اور دلیری کے ساتھ کشمیریوں کی ترجمانی کرے گی ۔ انہوں نے کہاکہ وزیراعظم اقوام متحدہ جارہے ہیں ، قوم امید رکھتی ہے کہ وہ اقوام متحدہ کے سامنے پوری جرأت کے ساتھ مسئلہ کشمیر اٹھائیں گے اور ہالینڈ اور ڈنمارک سمیت یورپ کے خاتم النبیین حضرت محمد صلی اللہ علیہ وسلم کی( نعوذ باللہ) اہانت پر مبنی خاکوں کے مقابلے کروانے والے ممالک کے خلاف پوری قوت سے آواز اٹھائیں گے ۔ یہ مقابلے عالم اسلام کے احتجاج پر وقتی طور پر روکے گئے ہیں ان کو مستقل طور پر ختم کروانے کی ضرورت ہے ۔ انبیائے کرام ؑ کی توہین کو اقوام متحدہ میں عالمی دہشتگردی قرار دیا جائے اور ان کے خلاف قانون سازی ہو ، تاکہ آئندہ کسی بد بخت کو کسی پیغمبر کی اہانت کرنے کی جرأت نہ ہو ۔ انہوں نے کہاکہ عمران خان کو اقوام متحدہ میں امریکی قید میں پاکستان کی مظلوم بیٹی ڈاکٹر عافیہ صدیقی کا مقدمہ بھی پوری جرأت سے اٹھانا چاہیے ۔ سابقہ حکمرانوں نے ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی رہائی کے لیے کچھ نہیں کیا ۔ موجودہ حکومت سے ہمارا مطالبہ ہے کہ عمران خان اقوام متحدہ میں اپنے خطاب میں ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی رہائی کا بھی مطالبہ کریں ۔ ایک سوال کے جواب میں سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ جماعت اسلامی آئندہ بلدیاتی انتخابات میں بھر پور تیاری کے ساتھ حصہ لے گی ۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ