الیسٹیر کک کی پہلے اور آخری دونوں ٹیسٹ میچوں میں سنچریاں

49
اوول: انگلش بلے باز ایلسٹرکک بھارت کے خلاف کیریئر کی آخری سنچری بنانے کے بعد داد وصول کرتے ہوئے
اوول: انگلش بلے باز ایلسٹرکک بھارت کے خلاف کیریئر کی آخری سنچری بنانے کے بعد داد وصول کرتے ہوئے

سید پرویز قیصر
انگلینڈ کے سابق کپتان الیسٹیرکک نے بھارت کے خلاف لندن کے اوول پر5ویں اور آخری ٹیسٹ کے چوتھے روز ٹیسٹ کرکٹ میں اپنی آخری اننگ میں کھانے کے وقفے سے قبل سنچری 210 گیندوں پر8 چوکوں کی مدد سے مکمل کی۔ اس ٹیسٹ کی پہلی اننگ میں وہ 265 منٹ میں190 گیندوں پر8 چوکوں کی مدد سے71 رنز بنانے میں کامیاب رہے تھے۔ وہ پہلے اور آخری دونوں ٹیسٹ میچوں میں سنچریاں بنانے والے انگلینڈ کے پہلے او ر مجموعی طور پر 5 ویں بلے باز بنے۔
الیسٹیر کک نے بھارت کے خلاف ناگپور میںیکم مارچ2006 کو اپنا پہلا ٹیسٹ کھیلا تھا اور پہلی اننگ 160 گیندوں پر 206منٹس میں 7 چوکوں کی مدد سے 60 رنز بنائے تھے۔ میچ کی دوسری اننگ میں انہوں نے اور بھی اچھی بلے بازی کا مظاہرہ کیا اور 364 منٹ میں243 گیندوں پر12 چوکوں کی مدد سے آؤٹ ہوئے بغیر104 رنزاور ان کھلاڑیوں میں شامل ہوئے جنہوں نے اپنے ٹیسٹ میں سنچری اسکور کی۔ وہ ایسا کرنے والے انگلینڈ کے16 ویں بلے باز تھے ۔ انکے بعد 3 کھلاڑی ایسا کرنے میں کامیاب ہوئے۔
ابھی تک103کھلاڑیوں نے پہلے ٹیسٹ میں سنچری بنانے کا اعزاز حاصل کیا ہے۔ الیسٹیر کک نے جب ایسا کیا تھا تو وہ 82 ویں کھلاڑی بنے تھے۔
بائیں ہاتھ سے بلے بازی کرنے والے الیسٹیر کک ایسے پہلے کھلاڑی بنے جنہوں نے اپنے پہلے اور آخری دونوں ٹیست میچوں کی 4اننگز میں50 سے زیادہ رنز بنائے۔الیسٹیر کک نے کئی مرتبہ اپنی شاندار اننگز کی بدولت انگلینڈ کو کامیابیاں دلائیں مگر اس سال انکی کارکردگی اچھی نہیں رہی جس کی وجہ سے انہوں نے ٹیسٹ کرکٹ کو الوداع کہنے کا فیصلہ کیا۔ ملبورن میں دسمبر2017 میں انہوں نے آسڑیلیا کے خلاف 634 منٹ میں409 گیندوں پر27 چوکوں کی مدد سے آؤٹ ہوئے بغیر 244رنز بنائے تھے جس کے بعدانہوں نے آخری ٹیسٹ سے پہلے تک صرف ایک نصف سنچری اسکور کی۔ ملبورن ٹیسٹ میں انہوں نے اننگ کی ابتدا کی اور انتہا تک ناٹ آؤٹ واپس گئے۔ انکے آؤٹ ہوئے بغیر244رنز اننگ کی ابتدا سے انتہا تک سب سے بڑا اسکور ہے۔
الیسٹیر کک نے ابھی تک اپنے آخری ٹیسٹ سے پہلے تک جو160 ٹیسٹ کھیلے ہیں انکی289 اننگز میں44.88 کی اوسظ اور46.97کے اسڑائیک ریٹ کے ساتھ32 سنچریوں اور 56 نصف سنچریوں کی مدد سے 12254رنزبنائے ہیں۔انکی 32 سنچریوں میں 5 ڈبل سنچریاں بھی شامل ہیں۔ بھارت کے خلاف بر منگھم میں2011 میں ہوئے ٹیسٹمیچ میں وہ773 منٹ میں545 گیندوں پر33 چوکوں کی مدد سے 294رنز بنانے میں کامیاب رہے تھے جو انکا ٹیسٹ کرکٹ میں سب سے بڑا اسکور ہے۔ ابوظبی میں اکتوبر2015 میں پاکستان کے خلاف کھیلے گئے ٹیسٹ میچ میں الیسٹیر کک نے836 منٹس میں528 گیندوں پر18 چوکوں کی مدد سے263 رنز بنائے تھے جو انگلینڈ سے باہر انکی سب سے بڑی اننگ کے ساتھ ساتھ انکی وقت کے لحاظ سے سب سے بڑی اننگ تھی۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ