تعلیم و تربیت سے صلاحیتوں میں اضافہ ہوتا ہے

89

 

تحریر
**
محمد
ندیم

علم سیکھنے کا عمل انسانی رویے کی تبدیلی میں اہم کردار ادا کرتا ہے۔ اپنے ادارے کراچی پورٹ ٹرسٹ کا بے حد مشکور ہوں جس نے نیلاٹ میں تین روزہ کورسز میں شرکت کا موقع دیا۔ ساتھ ہی نیلاٹ انتظامیہ کا جن کے توسط سے تجربہ کار تعلیم یافتہ اساتذہ سے علم حاصل کرنے کی زیر نگرانی کورسز کا انعقاد کیا۔ مسز عشرت تنویر نے تبدیلی کی اہمیت اور ضرورت کو واضح کیا۔ اس میں علم، احساسات، عمل، عادات اور ادارے کی ترقی کو بہت خوبصورت انداز میں منسلک کرکے شرکاء کو مستفید کیا۔ شفیق غوری نے شکایات کو سننے اور سمجھنے کے بعد ان کے حل کی طرف توجہ دلائی۔ SIRA کے شقوں 28,29,30 میں انتظامیہ اور CBA کے مختلف جوائنٹ کنسیلٹیشن فورم کو بڑے اچھے انداز میں پیش کیا۔ محمد جعفر نے فیصلے کی صلاحیت کو تقویت بخشنے کے لیے مختلف پہلوؤں پر روشنی ڈالی جس سے شرکاء کے علم میں اضافہ ہوا اور فیصلوں کی مختلف عناصر کو بھی واضح کیا۔ پروفیسر سید سہیل احمد نے ادارے اور ملازمین کے کردار اور رویوں پر بات کرتے ہوئے رویے کی تبدیلی اور اس کی افادیت پر روشنی ڈالی۔ مثبت رویے انسان کو ترقی کی طرف لے کر جاتے ہیں۔ نیلاٹ کے سابقہ
ڈی جی سید حاکم علی شاہ بخاری نے شکایات اور ان کے تدارک کے لیے شکایات سیل کی بھی بات کی اور اس عنوان کو سمیٹتے ہوئے تجرباتی معلومات فراہم کیں۔ نیلاٹ کے کورسز میں شرکت سے میری تعلیمی اور پیشہ وارانہ صلاحیتوں میں مزید اضافہ ہوا اور رویے میں مثبت تبدیلی کا باعث بنا۔ میری یہ تمام قابلیت میرے ادارے اور ملک کی ترقی کے لیے اثاثہ ثابت ہوگی اور مثبت کردار ادا کرسکوں گا۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ