نندی پور کرپشن: وزارت قانون کے حکام ملوث کے ہونے کا انکشاف

26

اسلام آباد (نمائندہ جسارت) نیب نے نندی پور پاور پلانٹ کرپشن کیس کی عبوری رپورٹ عدالت عظمیٰ میں جمع کرا دی، رپورٹ میں انکشاف کیا گیا ہے کہ نندی پور پاور پلانٹ کرپشن کیس میں وزارت قانون کے اعلیٰ حکام اور افسران ملوث ہیں، وزارت قانون اور وزارت پانی و بجلی کے اختلافات کے سبب منصوبے کی لاگت میں 27 ارب کا اضافہ اور عملدر آمد میں 2 سال کی تاخیر ہوئی، اسکینڈل میں ملوث ملزمان اور گواہان کے بیان ریکارڈ کیے جا رہے ہیں۔ تفصیلات کے مطابق نندی پور پاور پلانٹ کرپشن کیس میں حیران کن حقائق کا انکشاف ہوا ہے۔ نیب کی عبوری رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ نندی پور منصوبے کا ریکارڈ مل گیا ہے، جس کے مطابق وزارتِ قانون کے اعلی حکام اور افسران کرپشن اور اقدام کرپشن کے مرتکب ہوئے ہیں۔ وزارت قانون کی ہی وجہ سے منصوبے پر عملدرآمد میں 2 سال کی تاخیر ہوئی۔ وزارت قانون کے حکام اپنی قانونی ذمے داری ادا کرنے میں ناکام رہے۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ وزارت پانی و بجلی اور وزارت خزانہ کے بارہا رابطہ کرنے کے باوجود وزارت قانون نے معاملے پر قانونی رائے نہیں دی ان اختلافات کے سبب منصوبے کی لاگت 27 ارب 30 کروڑ تک بڑھ گئی۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ