غیر ملکی مخلوق اندرونی مافیا سے ملی ہوئی ہے،عمران خان 

128
کراچی: پی ٹی آئی کے سربراہ عمران خان باغ جناح میں جلسے سے خطاب کررہے ہیں
کراچی: پی ٹی آئی کے سربراہ عمران خان باغ جناح میں جلسے سے خطاب کررہے ہیں

کراچی(اسٹاف رپورٹر) پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ ہمیں کراچی کے حوالے سے جو کام کرنے چاہیے تھے وہ نہیں کر سکے، اڈیالہ جیل میں مزید کمرے بنائے جارہے ہیں کیوں کہ وہاں مزید لوگ آرہے ہیں، ن لیگ اور پیپلزپارٹی نے چارٹر آف ڈیموکریسی کرپشن کے لیے کیا تھا ۔کراچی میں جلسے سے خطاب میں ان کا کہنا تھا کہ اڈیالہ جیل سے پیغام جارہا ہے کہ بڑی چوری کروگے تو سہولیات ملیں گی، چھوٹی چوری کروگے تو مارے جاؤ گے۔انہوں نے کہا کہ سندھ کی پولیس عزیربلوچ کو تحفظ دیتی تھی، شوگر ملوں پر قبضے کرائے جاتے تھے۔عمران خان نے کہا کہ بلاول ہاؤس کے اطراف گھر زبردستی خالی کرائے گئے، ہمارا مقابلہ سیاست دانوں سے نہیں مافیا سے ہے۔انہوں نے اعتراف کیا کہ کراچی کے حوالے سے جوکام کرنے چاہیے تھے نہیں کرسکے۔عمران خان نے کہا کہ جو افراد 20۔22 سال قبل ساتھ تھے، ان کی خاندان پر دباؤبہت تھا ، جتنا خوف کراچی میں تھا اتنا خوف پورے سندھ میں بھی تھا۔ان کے مطابق مسلم لیگ ن اور پیپلز پارٹی نے چارٹر آف ڈیموکریسی کرپشن کرنے کے لیے کیا تھا۔انہوں نے کہا کہ سندھ کے دیگر علاقوں میں زرداری مافیا جبکہ پنجاب میں شریف خاندان کا قبضہ تھا ، کوئی بھی بااثر فرد آنے کے لیے تیار نہیں تھا۔انہوں نے کہا کہ عابد باکسر نے اعتراف کیا کہ شہباز شریف کے کہنے پر ماورائے عدالت قتل کیے۔چیئرمین تحریک انصاف نے کہا کہ یہ منی لانڈرنگ کرتے تھے، ملک کا پیسہ باہر لے کر جاتے تھے، انہوں نے پیسہ باہر لے جا کر ملک کو مقروض کیا ہے۔قبل ازیں کراچی ائر پورٹ پر صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے تحریک انصاف کے چیئرمین کا کہنا تھا کہ مجھ پرخود کش حملوں کی تھریٹ تھی لیکن کل میں بنوں اور کرک گیا،کرک اور بنوں میں ہمیں دھمکی آمیز خط لکھے گئے،ایک غیر ملکی مخلوق ہے جو اندرونی مافیا کے ساتھ ملی ہوئی ہے۔25 جولائی پاکستان کو بدلنے کا دن ہے۔لوگوں ووٹ دینے کے لیے گھر سے نکلنا ہوگا۔کراچی کے جلسے میں سندھ کو پیغام دینے آیا ہوں۔قبل از انتخابات دھاندلی کا شور، چور مچائے شور کے مترادف ہے۔ کراچی اور سندھ کا 25جولائی سے پہلے یہ آخری دورہ ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ