ن لیگ کے 5سالہ دور میں اربوں روپے کے قرضے قوم پر بوجھ ہیں

66

لاہور (نمائندہ جسارت) پاکستان مسلم لیگ ق کے رہنما وسیکرٹری اطلاعات پاکستان مسلم لیگ لاہور میاں کامران سیف نے کہا ہے کہ ن لیگی حکومت کے 5سال میں4520.8ارب کے غیر ملکی قرضے قوم پر بوجھ ہیں حکومتی قرضوں کا حجم ملکی معاشی صورتحال کیلیے نقصان دہ ہے بڑھتے ہوئے قرضوں نے ملک کو مقروضستان بنادیا ہے حکومتی بڑھتے ہوئے قرضوں کے باعث ہر پاکستانی اور پیدا ہونے والا بچہ بھی 1لاکھ 55ہزار کا مقروض ہے ۔ انہوں نے کہا کہ معیشت کا پہیہ چلانے کی خاطرگزشتہ کئی دہایؤں سے ہر آنے والی حکومت نئے قرضے کا بوجھ عوام پر چھوڑ جاتی ہے موجودہ حکومت بھی2018میں اپنی مدت کی تکمیل کے بعد یہ قرضے آنے والی حکومت کے ذمے چھوڑ کر رخصت ہو گئی۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے مسلم لیگ ہاؤس میں کارکنوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔میاں کامران سیف نے کہا کہ حکومت نے برسر اقتدار آتے ہی عوام سے کشکول توڑنے کا وعدہ کیا او ر غیر ملکی قرضے وصول نہ کرنے کا اعلان کیا لیکن اقتدار سنبھالنے کے کچھ عرصہ بعد قرضے لینے کا لامتناعی سلسلہ شروع کیا اور حکومتی قرضے بڑھتے بڑھتے 4520.8 ارب کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئے۔انہوں نے کہا کہ اب صورتحال یہ ہے کہ نگراں حکومت کو بھی کاروبار زندگی چلانے کیلیے مزید قرضے لینے پڑیں گے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت قرضے لینے کے بجائے ملکی برآمدات میں اضافہ کے اقدامات کرے تاکہ حکومتی زرمبادلہ کے ذخائر بڑھیں اور قرضوں سے نجات مل جائے۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ