اشرافیہ من مانی بند کرے تو ادارے بہتر خدمات انجام دینگے‘لیاقت بلوچ

35
لاہور: این جی اوسنگت کی عہدہ دار خواتین کا وفد منصورہ میں سیکرٹری جنرل جماعت اسلامی لیاقت بلوچ سے ملاقات کررہا ہے‘ ڈاکٹر فرید پراچہ اور امیر العظیم بھی موجود ہیں
لاہور: این جی اوسنگت کی عہدہ دار خواتین کا وفد منصورہ میں سیکرٹری جنرل جماعت اسلامی لیاقت بلوچ سے ملاقات کررہا ہے‘ ڈاکٹر فرید پراچہ اور امیر العظیم بھی موجود ہیں

لاہور(نمائندہ جسارت)جماعت اسلامی پاکستان کے سیکرٹری جنرل اور مجلس قائمہ سیاسی امور کے صدر لیاقت بلوچ نے منصورہ میں مرکزی قائدین کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہاہے کہ عدالت عظمیٰ ، احتساب بیورو ، ریاستی ادارے ، پارلیمنٹ اور نظام حکومت اسی وقت بہترین خدمات انجام دے سکتے ہیں کہ اشرافیہ من مانی ترک کرے ، آئین اور قانون کی بالادستی قبول کرے ، جمہوری باہمی احترام اور برداشت کا رویہ اختیار کیا جائے ۔ ہر فرد اپنی ذات کو ناگزیر اور اپنی ذات کی لڑائی کے بجائے اصول ، نظریے ، ملک و ملت اور آئین و قانون کو اولیت دے ۔ انہوں نے افسوس کا اظہار کیا کہ ملک کی 3 بڑی جماعتوں کے قائدین اور نمائندے ایسی زبان اور اسلوب بیان اختیار کیے ہوئے ہیں جو جمہوریت ، پارلیمانی نظام ، سیاست و انتخابات اور سیاسی کارکنان کے لیے نیک شگون نہیں ۔ مثبت ، تعمیری ، عوامی فلاح کے بجائے ذاتیات ہدف ہیں جس سے غیر سنجیدگی ، تلخی ، تہذیب اور باہمی سیاسی احترام کا جنازہ نکل رہاہے ۔



اعلیٰ سطح کی قیادت خود ہی اپنی اداؤں پر غور کرے جگ ہنسائی کا سبب نہ بنے۔ در یں اثنا لیاقت بلوچ سے منصورہ میں سنگت تنظیم کی خواتین رہنماؤں نے ملاقات کی اور انہیں پارٹی منشور میں ورکنگ ویمن کے مسائل کے لیے تجاویز اور یاد داشت دی ۔ اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے لیاقت بلوچ نے کہاکہ جماعت اسلامی خواتین کے تعلیم ، صحت ، روزگار ، جان مال عزت کے تحفظ پر پختہ یقین رکھتی ہے ۔ خواتین پر اعتماد ہوں گی توملک ترقی کرے گا ۔ خواتین کے حقوق کے تحفظ کے لیے جماعت اسلامی کا منشور انقلابی ہے ۔

Print Friendly
حصہ