فلسطین میں مقدس مقامات پر یہود کے دھاوے

42
مقبوضہ بیت المقدس: یہودی آباد کار بدھ کے روز مسجد اقصیٰ میں داخل ہو رہے ہیں‘ شرپسند حضرت یوسفؑ کے مزار کی بے حرمتی کر رہے ہیں
مقبوضہ بیت المقدس: یہودی آباد کار بدھ کے روز مسجد اقصیٰ میں داخل ہو رہے ہیں‘ شرپسند حضرت یوسفؑ کے مزار کی بے حرمتی کر رہے ہیں

مقبوضہ بیت المقدس (انٹرنیشنل ڈیسک) فلسطین کے مقبوضہ مغربی کنارے میں مسلمانوں کے مقدس مقامات پر یہودی آبادکاروں کے دھاوے جاری ہیں۔ فلسطینی ذرائع ابلاغ کے مطابق اسرائیل میں منائے جانے والے مذہبی تہوارعیدعریش کے چوتھے روز بدھ کی صبح کے وقت ایک ہزار یہودی آبادکاروں نے حضرت یوسف علیہ السلام کے مزار پر دھاوا بولا۔ اس دوران یہودی آبادکار قبر مبارک اور مزار شریف پر چڑھ کر قابل احترام مقام کی بے حرمتی کرتے رہے۔ دوسری جانب بدھ کے روز 312 یہودی آباد کاراسرائیلی فوج اور پولیس کی فول پروف سیکورٹی میں مسجد اقصیٰ میں داخل ہوئے اور قبلہ اول میں گھس کر مذہبی رسومات کی آڑ میں مقدس مقام کی بے حرمتی کی۔ عینی شاہدین نے بتایا کہ یہودی آباد کاروں کی بڑی تعداد مراکشی دروازے سے مسجد اقصیٰ میں داخل ہوئی۔ اس موقع پر اسرائیلی فوج اور پولیس کی بھاری نفری تعینات کی گئی تھی۔ مسجد اقصیٰ کے دروازوں کے باہر تعینات اسرائیلی فولیس نے فلسطینی نمازیوں کے ساتھ بدسلوکی کی اور انہیں قبلہ اول میں عبادت کے لیے داخل ہونے سے روکنے کی کوشش کرتے رہے۔



صہیونی فوج کی جانب سے روکنے پر فلسطینی مشتعل ہوگئے، اور انہوں نے صہیونی فوج اور پولیس کی غنڈا گردی کے خلاف شدید نعرے بازی کی۔ ادھر مذہبی تہوار کی آڑ میں 48گھنٹوں کے دوران 40 ہزار یہودی شرپسند مسجد ابراہیمی میں داخل ہوئے اور مقدس مقام کی بے حرمتی کی۔ خیال رہے کہ ان دنوں اسرائیل میں یہود کے مذہبی تہوارعید عرش کی 10 روزہ تقریبات منائی جا رہی ہیں۔اس دوران نہ صرف مغربی کنارے کے مقبوضہ علاقوں میں سیکورٹی کے نام پر فلسطینیوں کا جینا حرام کردیا گیا ہے، بلکہ ساتھ ہی مسلمانوں کے مقدس مقامات پر یہود کی آمد کا سلسلہ بھی جاری ہے۔

Print Friendly
حصہ