زاہد عباس

52 مراسلات 0 تبصرے

صحافت کا درخشاں ستارہ

کورونا وائرس کے باعث پچھلے کئی ہفتوں سے میں جسارت کے آفس نہیں گیا۔ اپنے مضامین چونکہ بذریعہ ای میل بھیج دیا کرتا ہوں...

راجو نے بھی گائے خرید لی

۔’’او بھائی، بھائی صاحب! کتنے کا لیا یہ جانور؟ سنو، کتنے کا ہے بتاتے جاؤ۔ اچھا اس کالے والے کے ریٹ تو بتادو۔‘‘ مویشی منڈی...

۔”روک سکو تو روک لو”۔

بچپن میں دادی اماں کہا کرتی تھیں ’’بیٹا! روشنی کم ہوگئی ہے، لالٹین کی بتی اونچی کردو‘‘۔ یعنی لالٹین میں جلنے والے کپڑے کو...

۔” جو بچے گا وہ قربانی کرے گا “۔

۔’’رسید (رشید) عید سر پر آگئی ہے اور تُو نے اب تک چھریاں تیج (تیز) نہیں کیں۔‘‘ ’’ابا آج کے دور میں کون چھری تیج...

۔”مائی کولاچی گوٹھ”۔

’’خمیسو بھائی السلام علیکم …کیا حال ہیں۔‘‘ ’’خیریت ہے، تم سناؤ کہاں چلے؟‘‘ ’’جانا کہاں! بازار گیا تھا، وہیں سے آرہا ہوں۔ تم سناؤ خمیسو بھائی...

دشمن کا دشمن سجن

۔’’انکل چین نے بھارت کو جو سبق سکھایا ہے اُس پر پورا ملک خوشیاں منا رہا ہے۔ چین کی جانب سے بھارت کی چھترول...

تمام نظریں وزیراعظم کی جانب

۔’’افتخار بھائی! پھر بجٹ آگیا۔ اِس مرتبہ بھی گزشتہ سال کی طرح بجٹ میں عوام کے لیے کچھ نہیں۔‘‘ ’’یار کیوں کچھ نہیں ہے! تعصب...

برائے فروخت

کشادہ سڑکیں، سرسبز و شاداب میدان، پختہ گلیاں، ایک ترتیب سے بنے خوبصورت مکانات، بجلی، گیس اور پینے کے صاف پانی کی نان اسٹاپ...

کس کا مؤقف درست

’’ماسٹر صاحب یہ آپ کے پرائیویٹ اسکول والوں کو کیا ہوگیا ہے، آئے دن پریس کانفرنس کررہے ہیں! کبھی بچوں کا تعلیمی سال ضائع...

یہ سزابھی خوب ہے

’’رشید بھائی، خیریت سے ہیں…! عید مبارک۔ اور سنائیں عید کیسی گزری۔‘‘ ’’عید کیسی گزری! یہ نہ ہی پوچھو تو اچھا ہے۔‘‘ ’’کیا مطلب؟ کوئی مسئلہ...
پرنٹ ورژن
Friday magazine