لینن……………اقبال

89

آج آنکھ نے دیکھا تو وہ عالم ہْوا ثابت
میں جس کو سمجھتا تھا کلیسا کے خرافات

ہم بندِ شب و روز میں جکڑے ہْوئے بندے
تْو خالقِ اعصار و نگارندۂ آنات!