گذشتہ حکومت نے اسٹیل ملز کو تباہ کیا، وفاق ملازمین کو بحال کرے،حافظ نعیم  

215

کراچی: امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن کا کہنا ہے کہ پیپلز پارٹی نے اسٹیل ملز میں سیاسی بھرتیاں کرکے ادارے کو مالی خسارہ اور ن لیگ نے گیس بندکرکے تباہ کیا اور اب پی ٹی آئی بھی اسٹیل مل کی بحالی کے بجائے ملازمین کو فارغ کرکے ہزاروں خاندانوں کے چولہے ٹھنڈے کر رہی ہے۔

ادارہ نور حق میں پاکستان اسٹیل ملز کے ہزاروں ملازمین کی برطرفی کیخلاف پاسلو یونین کے عہدیداران کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے حافظ نعیم الرحمن پاکستان اسٹیل ملز کے 4500سے زائد ملازمین کی جبری برطرفی کی شدید مذمت کرتے ہوئے مطالبہ کیا کہ وفاقی حکومت قومی ادارے اسٹیل ملز کو چلانے کا روڈ میپ دے اور برطرف تمام ملازمین کو فوری بحال کیا جائے۔

حافظ نعیم الرحمن نے کہا کہ جماعت اسلامی پاکستان اسٹیل مل کے ملازمین کے ساتھ کھڑی ہے،تحریک انصاف  بھی بحالی کے بجائے ملازمین کو فارغ کر رہی ہے۔

امیر کراچی کا کہنا تھا کہ ،جماعت اسلامی نے ملازمین کیلیے قانونی و سیاسی جنگ لڑی ہے، آئندہ بھی جدوجہد جاری رکھیں گے،وزیر اعظم عمران خان اور اسد عمر اقتدار میں آنے سے پہلے کہتے تھے کہ وہ حکومت میں آکر اسٹیل ملز کو بحال اور ملازمین کو تحفظ فراہم کریں گے، لیکن اب وہ خود ملازمین کو فارغ کر رہے ہیں۔

حافظ نعیم الرحمن نے کہا کہ وفاقی وزیر حماد اظہر کا ملازمین کو 23لاکھ روپے دینے کا اعلان مذاق کے مترادف ہے، جبکہ حقیقت یہ ہے کہ تقریباً ڈھائی ہزار ملازمین کو ایک ماہ کی تنخواہ اورڈھائی سے تین لاکھ روپے ادا کیے جائیں گے۔

حافظ نعیم الرحمن نے کہا کہ ہماری عدالت عالیہ اور عدالت عظمیٰ سے بھی درخواست ہے کہ وہ اس سنگین صورتحال کا نوٹس لے اور غریبوں کو بے روزگار ہو نے سے بچایا جائے اور جن لوگوں کو فارغ کر دیا گیا ہے، انہیں بحال کیا جائے، اس سے قبل بھی سپریم کورٹ نے نجکاری کو کالعدم قراردیا تھا۔