سینیٹر سراج الحق اور لیاقت بلوچ کا خیر مقدم

321

لاہور(نمائندہ جسارت) امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے طالبان امریکا کے درمیان ہونے والے معاہدے کا خیر مقدم کرتے ہوئے کہاہے کہ ہم معاہدے کی کامیابی کے خواہاں ہیں۔ امریکا اپنے وعدے کے مطابق فوری طور پر افغانستان سے نکل جائے ۔ انہوں نے کہاکہ دوسرا اہم ترین مرحلہ بین الافغان مذاکرات ہیں ۔اب افغانستان کے اندرونی معاملات میں بیرونی مداخلت ختم ہونی چاہیے ۔ہمیں امید ہے کہ معاہدے سے افغانستان میں امن قائم ہوگا ۔ اب بین الافغان مذاکرات ہونے چاہئیں۔پاکستان کو افغانستان میں امن کے قیام کے لیے نتیجہ خیز کوششیں جاری رکھنی چاہئیں ۔ امریکا کے آنے سے پاکستان اور افغانستان کو جو نقصان پہنچا ہے امریکا کو اس کی تلافی کرنی چاہیے ۔نائب امیر جماعت اسلامی اور سابق رکن قومی اسمبلی لیاقت بلوچ نے افغان طالبان اور امریکا کے درمیان امن معاہدے پراپنے ردعمل میں کہا کہ افغان عوام نے بے مثال استقامت سے امریکا کو سرنڈر کرنے پر مجبور کیا ہے ۔ برطانیہ ، سوویت یونین کے بعد امریکا بھی افغانستان میں ذلت و رسوائی سے دوچار ہواہے ۔ لیاقت بلوچ نے کہاکہ طالبان قیادت اور افغان قیادت جہاد افغانستان کے بعد کے نتائج سے سبق سیکھتے ہوئے افغانستان کو امن و استحکام کا گہوارہ بنائیں ۔ انہوںنے کہاکہ پاکستان نے ایک طویل مدت سے بہتر حکمت عملی کے ساتھ ہمیشہ افغانستان میں امن و استحکام کے لیے کردار ادا کیاہے اور ہمیشہ بہادر افغان عوام کا ساتھ دیاہے ۔