حیدرآباد کے سینئر صحافی الیاس وارثی اپنے فلیٹ میں قتل

318
حیدرآباد: سینئر صحافی الیاس وارثی کی نعش فلیٹ میں رکھی ہوئی ہے
حیدرآباد: سینئر صحافی الیاس وارثی کی نعش فلیٹ میں رکھی ہوئی ہے

حیدرآباد(اسٹاف رپورٹر) حیدرآباد کے سینئر صحافی الیاس وارثی کو پولیس ہیڈ کوارٹر سے متصل الرحیم سینٹر میں واقع ان کے فلیٹ میں قتل کردیا گیا۔پولیس کے مطابق قتل کی وار دات ہفتے کی صبح چار سے پانچ بجے درمیان ہوئی ۔قتل کی اطلاع ملتے ہی پولیس کے اعلی افسران حیدرآباد کے صحافیوں کی بڑی تعداد پہنچ گئی ۔پولیس نے نعش کو تحویل میں لے کرتحقیقات شروع کردی ہے اور رات دس بجے تک نعش کو پوسٹم مارٹم کے لیے اسپتال منتقل نہیں کیا تھا۔ فرانزک ٹیسٹ فلیٹ میں ہی لیے جارہے تھے۔ الیاس
وارثی کو سر پر وزنی چیز مار کر قتل کیا گیا۔گھر کی الماری کے کپڑے اور دیگر سامان بکھرا ہوا تھا اور بظاہر ڈکیتی کی وار دات کا رنگ دینے کی کوشش کی گئی ہے۔ پولیس نے رپورٹ درج کرکے تحقیقات شروع کردی ہے ۔جبکہ ایڈیشنل آئی جی حیدرآباد ریجن غلام سرور جمالی نے فوری طور پر رپورٹ طلب کرلی ہے ۔الیاس وارثی فلیٹ پرتنہارہائش پزیر تھے اور پولیس کے مطابق قتل کی وار دات صبح چار اور پانچ بجے کے درمیان ہوئی تاہم قتل کا انکشاف اس وقت ہوا جب ان کے صاحبزادے ان کو کھانے دینے کے لیے سہ پہر کے وقت پہنچے تو سامان بکھرا ہوا تھا اور الیاس وارثی اپنے بستر پر سیدھے لیٹے ہوئے تھے جیسے کسی نے ان کو سوتے ہوئے سر پر کوئی وزنی شے مارکر قتل کیا ہو۔ تاہم پولیس نے ابھی حتمی طور پر کچھ نہیں بتایا ہے۔ واقعے کی اطلاع ملتے ہی صحافیوں کی بڑی تعداد صحافتی تنظیموں کے نمائندوں کے علاوہ اعلی پولیس افسران بھی پہنچ گئے جبکہ صوبائی مشیر مرتضیٰ وہاب نے الیاس وارثی کے قتل کی مذمت کرتے ہوئے فوری طور پر قاتلوں کی گرفتاری اور اس حوالے سے رپورٹ طلب کرلی ہے ۔
صحافی قتل