پڑھے لکھے بے روزگاروں کی تعداد میں اضافہ ہورہا ہے، جنوبی کوریا

34

سیئول (اے پی پی) جنوبی کوریا میں پڑھے لکھے بے روزگاروں کی تعداد میں اضافہ ہورہا ہے۔ جدید ترقیاتی ملک میں شرح خواندگی میں اضافہ کے باوجود بہتر معیار زندگی کے خواہش مند افرادکو اپنے خوابوں کی تکمیل میں مشکلات درپیش آرہی ہیں۔ ایک بے روزگار خاتون چو من کیونگ جس نے یونیورسٹی سے انجینیئر نگ میں ڈگری حاصل کی اورانگلش ٹیسٹ میں بہترین نمبر حاصل کئے ۔ہونڈائی موٹر کمپنی سمیت دیگر 10 جگہوں پر روزگار کی درخواست دینے کے باوجود ملازمت حا صل کرنے میں ناکام رہی تاہم وہ پڑوسی ملک جاپان کی موٹر ساز کمپنی نسان میں روزگار حاصل کرنے میں کامیاب ہو گئیں۔ میڈیا سے گفتگو میں انہوں نے کہا میری طرح جنوبی کوریا کے لوگوں کو روز گار کے لئے ملک سے باہر مواقع تلاش کرنے چاہیں جنوبی کوریا جو ایشیا کی چوتھی بڑی معشت ہے کے نوجوانوں کو روز گار کا مسئلہ درپیش ہے جو اس مسئلہ کے حل کے لیے حکومت کے سپانسر کردہ پروگراموں کے ذریعہ سمندر پار ملازمت کے لئے درخواستیں دے رہے ہیں جن میں سے زیادہ تر جاپان اور امریکا جیسے ممالک کی طرف رخ کر رہے ہیں۔