سندھ ہائیکورٹ کے ملازم نے چوتھی منزل سے چھلانگ لگاکرخود کشی کرلی

37
سندھ ہائیکورٹ کی چھت سے خودکشی کرنے والے ملازم کی لاش کے قریب لوگ جمع ہیں
سندھ ہائیکورٹ کی چھت سے خودکشی کرنے والے ملازم کی لاش کے قریب لوگ جمع ہیں

کراچی( اسٹاف رپورٹر) سندھ ہائیکورٹ کے احاطے میں قائم نیوانیکسی بلڈنگ کی چوتھی منزل سے چھلانگ لگا کرایک شخص نے مبینہ طور پر خود کشی کرلی، متوفی اٹارنی جنرل آف پاکستان کے دفتر میں بطور کلرک ملازمت کرتا تھا۔ تفصیلات کے مطابق پریڈی تھانے کے علاقے میں واقع سندھ ہائیکورٹ کے احاطے میں قائم نیوانیکسی بلڈنگ کی چوتھی منزل سے ایک شخص نے چھلانگ لگا دی جس سے مذکورہ شخص موقع پرہی جاں بحق ہوگیا جس کی لاش ضابطے کی کارروائی کے لیے جناح اسپتال منتقل کردی گئی جہاں متوفی کی شناخت51 سالہ محمد آصف خان ولد محمد باسط خان کے نام سے کرلی گئی، متوفی لیاقت آباد ایف سی ایریا کا رہائشی اور اٹارنی جنرل آف پاکستان کے دفتر میں بطورکلرک ملازمت کرتا تھا، متوفی کے سوگواران میں ایک بیٹا اور2 بیٹیاں شامل ہیں، اس حوالے سے ایس ایچ او پریڈی انسپکٹر لیاقت حیات کے مطابق متوفی آصف خان نے سندھ ہائیکورٹ کے احاطے میں قائم نیو انیکسی بلڈنگ کی چوتھی منزل سے چھلانگ لگا کر مبینہ طور پرخود کشی کی ہے اور فوری طور پرخود کشی کی وجہ معلوم نہیں ہوسکی ہے۔انہوں نے بتایا کہ پولیس نے نیو انیکسی بلڈنگ میں نصب سی سی ٹی وی کیمروں کی فوٹیج حاصل کرنے کے لیے سندھ ہائیکورٹ کے رجسٹرار کو تحریری درخواست بھی کی ہے۔