لوگ چیخ چیخ کر مررہے ہیں،انصاف نہیں مل رہا،تمام ججوں کا احتساب ہوگا،چیف جسٹس 

85

اسلام آباد/لاہور(نمائندگان جسارت)چیف جسٹس پاکستان میاں ثاقب نثار نے ریمارکس دیے ہیں کہ لوگ چیخ چیخ کر مر رہے ہیں اور انصاف نہیں مل رہا، اب تمام ججز کا احتساب ہوگا۔انہوں نے کہا کہ سپریم جوڈیشل کونسل اب بہت متحرک ہوگیا اور احتساب کا عمل شروع ہوچکا ہے۔جمعہ کوہائیکورٹس کی ذیلی عدالتوں سے متعلق سپروائزری کردار کے بارے میں کیس کی سماعت کے دوران چیف جسٹس نے کہا کہ کم مقدمات کے فیصلے کرنے والے ججز کے خلاف بھی آرٹیکل 209 کے تحت کارروائی ہوگی اور ججز کو چھٹی والے دن کی تنخواہ نہیں ملے گی۔چیف جسٹس نے کہا کہ لاہور ہائیکورٹ اپنی ذمے داریوں میں ناکام نظر آتی ہے، لوگ تڑپ رہے ہیں، بلک رہے ہیں لیکن کسی کو کوئی فکر نہیں، ہائیکورٹس کی نگران کمیٹیاں ان معاملات کو کیوں نہیں دیکھ رہیں۔چیف جسٹس نے ریمارکس دیے ہر جج کو گاڑی ، بنگلہ،مالی ودیگر مراعات چاہئیں، کیا ہم ہائیکورٹ کی نگراں کمیٹیوں کے ججز کو چیمبر میں بلا کر کارکردگی پوچھیں۔چیف جسٹس نے ایڈیشنل اٹارنی جنرل سے سوال کیا اگر کہیں ہائیکورٹ کے سپروائزری کردار سے مطمئن نہیں تو کیا کہیں گے جس پر انہوں نے جواب دیا آپ کے حکم کی تعمیل کریں گے۔بعد ازاں سپریم کورٹ بار ایسوسی ایشن کے زیرِ اہتمام لاہور میں ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے چیف جسٹس نے کہا کہ مقدمات کو نمٹانے میں تاخیر ایک ناسور بن چکا ہے اور ملک میں ججز سب سے زیادہ تنخواہ لیتے ہیں جبکہ یومیہ فی جج پر 55ہزار روپے خرچ ہوتے ہیں،ججز جتنی تنخواہ لیتے ہیں اتنا کام بھی کریں۔انہوں نے ججز کو مخاطب کرتے ہوئے سوال اٹھایا کہ کیا ججز سمجھتے ہیں کہ وہ روزانہ 55 ہزار روپے والا کام کرتے ہیں؟جب جج ذمے داری پوری نہیں کریں گے تو فیصلوں میں دیر لگے گی ۔انہوں نے کہا کہ کفر کا معاشرہ قائم رہ سکتا لیکن جہاں بے انصافی کا عروج ہووہاں معاشرے کی بنیادیں کھڑی نہیں رہ سکتیں۔انہوں نے یہ بھی کہا کہ قوم کو مایوس نہیں کرنا چاہتا، آنے والے وقت میں جلد انصاف ملے گا۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ

جواب چھوڑ دیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.