آئی ایم ایف جانیکا کڑوا گھونٹ سابق حکمرانوں کے باعث پیا ‘حکومت

51

اسلام آباد(آن لائن)سینیٹ میں حکومت نے بتایاہے کہ آئی ایم ایف کے پاس جانے کا کڑوا گھونٹ سابق حکومتوں کی کارستانیوں کی وجہ سے پیا‘سابق حکومتیں آئی ایم ایف کے پاس گئیں تو شورشرابہ کیوں نہ ہوا‘ ہم وعدہ کرتے ہیں کہ ملک و قوم کی پائی پائی کی حفاظت کریں گے۔ان خیالات کا اظہار گزشتہ روز عوامی اہمیت کے حامل سوالات کے جواب میں وزیرمملکت برائے خزانہ حماد رضا نے سینیٹ میں کیا ۔انہوں نے کہاکہ ملک میں ڈالر کی قیمت 133روپے ہے ،138 روپے آپ جیسے کاروباری افراد نے مارکیٹ میں کررکھی ہے ، بڑے افسوس کی بات ہے کہ آج وہ لوگ ہم پر انگلی اٹھا رہے ہیں جو ایک نہیں 10,10بار آئی ایم ایف کے پاس جاچکے ہیں۔سینیٹر رضا ربانی نے کہا کہ حکومت نے کہا تھا کہ وہ آئی ایم ایف کے پاس نہیں جائے گی اور اگر چلی بھی گئی ہے تو پارلیمنٹ کو اعتماد میں لینا تک گوارا نہ کیا۔ سینیٹر مشاہد اللہ نے کہا کہ جب انقلاب کی باتیں کی جاتی ہیں تو پھر ہمارے نقش قدم پر کیوں چلا جاتا ہے‘ اگر ہم برے تھے تو آپ آئی ایم ایف کے پاس کیوں گئے؟ انہوں نے ایک شعر میں کہا ’’زندگی کے نرخ اتنے بڑھ گئے، موت کا سودا بھی ہمیں سستا لگا‘‘۔اپوزیشن لیڈر شہبازشریف سے متعلق حکومت پہلے ہی دھمکیاں دے چکی تھی اگرچہ انہیں نیب نے گرفتار کیا ہے لیکن اس کے پیچھے حکومت کا ہاتھ خارج ازامکان نہیں ۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ