عمران خان نے آئی ایم ایف سے فوری رابطے کی منظوری دیدی 

380
اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان معاشی صورتحال کے حوالے سے اجلاس کی صدارت کررہے ہیں
اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان معاشی صورتحال کے حوالے سے اجلاس کی صدارت کررہے ہیں

اسلام آباد( خبرایجنسیاں) وزیراعظم عمران خان نے معاشی بحران سے نمٹنے کے لیے آئی ایم ایف سے فوری رابطے کی منظوری دے دی۔وفاقی حکومت نے آئی ایم ایف کے پاس جانے کا اعلان کردیا۔وزیر خزانہ اسد عمر کا کہنا ہے کہ ملک جس طرح کے معاشی حالات سے گزر رہا ہے وہ کسی سے ڈھکا چھپا نہیں، معاشی بحالی آسان نہیں ایک مشکل چیلنج ہے، ملک کے عوام کو اس بات کا ادراک ہے کہ گزشتہ حکومت کیسے معاشی حالات چھوڑ کرگئی تھی،ماہرین معاشیات سمیت دوست ممالک سے بھی مشاورت کی گئی اور اب ہم اس نتیجے پر پہنچے ہیں کہ ہمیں آئی ایم ایف کے ساتھ مذاکرات کا آغاز کرنا چاہیے اور ایسا پروگرام ترتیب دیں کہ ملک کو معاشی بحرانوں سے نکال سکیں۔وزیر خزانہ کا کہنا تھا کہ حکومت نے آئی ایم ایف کے ساتھ مذاکرات کے آغاز کا فیصلہ کیا ہے اور وزیر اعظم عمران خاننے فوری مذاکرات کی منظوری دے دی ہے، مستقل بنیادوں پر معیشت میں بہتری لاکر ملک کو پاؤں پر کھڑا کرنا اور روزگار کی فراہمی معاشی ترجیحات میں شامل ہیں، بحالی کا ایسا پروگرام چاہتے ہیں جس سے کمزور طبقے پر کم اثر پڑے۔بعد ازاں وزیرخزانہ کی سربراہی میں پاکستانی وفد انڈونیشیا روانہ ہوگیا جہاں آئی ایم ایف اور ورلڈبینک کے سالانہ اجلاس میں شرکت کے علاوہ آئی ایم ایف کے حکام سے قرض کی فراہمی کے لیے مذاکرات ہوں گے۔علاوہ ازیں وزیراعظم نے اقتصادی اور سیاسی صورتحال کا جائزہ لینے کے لیے وفاقی کابینہ کا اجلاس جمعرات کو طلب کرلیا ہے جب کہ وفاقی اورصوبائی وزرا کو اپنے محکموں میں 10برس کا آڈٹ کراکے سابقہ حکومت کی کرپشن میڈیا میں پیش کرنے کی ہدایت کی ہے۔ عمران خان نے وزیراعظم ہاؤس میں اعلیٰ سطح کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے دورہ چین اور سی پیک منصوبوں پر بھی غور کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ پاک چین سدابہار دوستی اور اسٹریٹجک شراکت داری کو مضبوط بنانا پاکستان کی خارجہ پالیسی کا بنیادی ستون ہے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق وزیراعظم نے اپنے دفتر میں شکایات سیل بنانے کا فیصلہ کرلیا ہے۔ یہ سیل 40ٹیلی فون لائنز پر مشتمل ہو گا جس میں وزیراعظم اور ارکان اسمبلی براہ راست شکایات سنیں گے ۔ شکایات سیل کے دفتری اوقات صبح 9 سے 5بجے تک ہو ں گے۔ شکایات سیل سے ای میل اور واٹس ایپ کے ذریعے بھی رابطہ کیا جاسکے گا۔علاوہ ازیں وزیراعظم نے ملک بھر میں چہار جہتی ’’کلین اینڈ گرین پاکستان‘‘ مہم کا افتتاح کرتے ہوئے پوری قوم سے اپیل کی ہے کہ وہ اس مہم میں بڑھ چڑھ کر حصہ لے۔ ان کا کہنا تھا کہ فضائی و زمینی آلودگی سمیت ہر قسم کی آلودگی کا خاتمہ کیا جائے گا، قومی سطح پر صفائی کی ہمہ گیر تحریک کا باقاعدہ اور عملی آغاز 13 اکتوبر کو ہوگا، پانچویں کلاس تک نصاب میں صفائی اور ماحولیات سے متعلقہ ابواب شامل کریں گے، تحصیل کی سطح پر صفائی کے انعامی مقابلوں کا اہتمام کیا جائے گا۔ وزیراعظم نے کہا کہ ملک بھر میں پیٹرول پمپس اور سی این جی اسٹیشنوں کے بیت الخلاء کی صفائی کو یقینی بنانے کی ہدایات جاری کر دی گئی ہیں، بصورت دیگر جرمانہ عاید کیا جائے گا، کلین اینڈ گرین پاکستان اسکاؤٹس کا اندراج کریں گے جو رضاکارانہ طور پر صفائی مہم کی مانیٹرنگ کریں گے اور ان میں سے نوجوانوں کو روزگار بھی دیا جائے گا.۔ عمران خان نے بتایاکہ5سال میں 10 ارب درخت لگائے جائیں گے، ماحولیاتی تبدیلیوں کے خلاف یہ سب سے بڑی مہم ہو گی۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ