ترک وزیر خارجہ کی باجوہ اور شاہ محمود سے ملاقاتیں دفاعی اور تجارتی تعاون بڑھانے پر متفق

123
اسلام آباد: ترک وزیرخارجہ چاوش اولو پاکستانی ہم منصب شاہ محمود قریشی سے ملاقات کررہے ہیں
اسلام آباد: ترک وزیرخارجہ چاوش اولو پاکستانی ہم منصب شاہ محمود قریشی سے ملاقات کررہے ہیں

اسلام آباد(آن لائن)پاکستان اور ترکی نے تجارتی، اقتصادی، سرمایہ کاری اور دفاعی تعلقات کو مزید فروغ دینے سمیت آزادانہ تجارتی معاہدے (ایف ٹی اے) کو جلد از جلد عملی جامہ پہنانے پر اتفاق کیا ہے۔ یہ اتفاق رائے جمعہ کو صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی، وزیراعظم عمران خان ،آرمی چیف جنرل قمر باجوہ اور دفتر خارجہ میں دونوں ملکوں کے مابین وفود کی سطح پر مذاکرات کے دوران پایا جس میں وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے پاکستانی وفد جبکہ ان کے ترک ہم منصب میولٹ چاوش اولو نے ترک وفد کی قیادت کی، دونوں رہنماؤں کے درمیان ون آن ون ملاقات ہوئی جس میں دونوں ممالک کے درمیان جاری منصوبوں سمیت خطے کی مجموعی صورت حال پر تبادلہ خیال کیا گیا، بعد ازاں دونوں ممالک کے درمیان وفود کی سطح پر مذاکرات ہوئے اور یادداشتوں پر دستخط کرنے کے بعد دستاویزات کا تبادلہ کیا گیا۔مشترکہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے ترک وزیر خارجہ چاوش اولونے کہا ہے کہ حکومتیں آتی جاتی رہتی ہیں لیکن دونوں ملکوں کا تعلق اور دوستی لازوال ہے،نئی حکومت کے ساتھ پہلے سے زیادہ جذبے سے تعاون بڑھائیں گے ۔ترکی پاکستان میں دفاعی ،اسٹرٹیجک ، اقتصادی اور تجارت سمیت خطے کے مسائل حل کرنے میں مکمل تعاون کرے گا ،پاکستان اور ترکی نے دہشت گردی کیخلاف جنگ میں سب سے زیادہ قربانیاں دی ہیں، پاکستان آکر بے حد خوشی ہوئی اور ہم پاکستان کو اپنا دوسرا گھر سمجھتے ہیں، بہترین استقبال پر اپنے ہم منصب اور دیگر کا شکریہ ادا کرتا ہوں۔ انہوں نے کہا کہ مذاکرات میں بہت سے موضوعات پر بات چیت کی گئی اور یہ موضوعات ہماری کامیابی کا سبب بنیں گے۔بات چیت کا اہم موضوع اعلیٰ سطح کے اسٹرٹیجک تعلقات سے متعلق تھا اور ان شاء اللہ ہم دونوں ممالک کے درمیان طے پانے والے معاہدوں کو عملی جامہ پہنائیں گے اور ترک کمپنیوں کو پاکستان میں کاروبار کرنے کی ترغیب دینگے۔انہوں نے کہا کہ دونوں ملکوں کے درمیان دفاعی تعلقات کو بھی مزید مضبوط بنانے کی کوشش کریں گے۔جس کی مثال پاکستانی سربراہ ہوا بازی کی اس وقت ترکی میں ہیلی کاپٹر حاصل کرنے پر بات چیت جاری ہے۔انہوں نے کہا کہ عالمی سطح پر جو مسائل ہیں اس کے لیے دونوں ملکوں کی ایک جیسی رائے ہے اور اسلامی تنطیم برائے تعاون کو ہماری پوری معاونت حاصل ہے،ہم اس ضمن میں اپنا تعاون ادا کرتے رہیں گے۔ ترک وزیر خارجہ نے کہا کہ مغرب میں اسلام کیخلاف پروپیگنڈا بڑھتا جارہا ہے،ہالینڈ میں اسلام کیخلاف جو پروپیگنڈا چلایا گیا وہ ہم نے مل کر ناکام کر دیا ہے اور آئندہ بھی ایسے تمام مکروہ اقدامات کو مل کر ناکام بنائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ ترکی میں بغاوت کیخلاف پاکستان اور اس کے عوام کے تعاون کو کبھی بھی نہیں بھلا پائیں گے اور مزید ایسے اقدامات کے سدباب کے لیے پاکستان ترکی کا ساتھ دے۔انہوں نے کہا کہ ترکی کی خواہش ہے کہ پاکستان بھارت کے ساتھ مل کر اقوام متحدہ کی قرار دادوں اور کشمیری عوام کی خواہشات کے مطابق کشمیر کا مسئلہ حل کرے،اقوام متحدہ میں کشمیر کے مسئلے پر بنائے جانے والے ورکنگ گروپ کے ساتھ بھر پور تعاون کریں گے اور اسلامی ممالک تنظیم کے ساتھ مل کر اس معاملے کو اٹھائیں گے اور پاکستان کی کامیابی کے لیے بھر پور کردار اداکریں گے۔ انہوں نے کہا کہ ہم دونوں ممالک کو مل کر اکٹھا چلنا ہو گا اور دہشت گردی کیخلاف جنگ میں ایک دوسرے کے ساتھ کھڑا ہونا ہمارے مفاد میں ہوگا،فوجی تعاون سمیت دفاعی شعبوں میں تعاون اور بجلی سمیت مختلف خطے کے مسائل جیسے افغانستان پر مل کر یکجہتی دکھانا ہو گی اور ہمارا پختہ عزم ہے کہ ہم مل کر گلوبل مسائل کا حل نکال لیں گے۔ قبل ازیں شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ ترکی نے مشکل وقت میں ہمیشہ پاکستان کا ساتھ دیا اور ہمارے تعلقات حکومتوں تک محدود نہیں بلکہ یہ عوام کی دلوں کی آواز ہے، پاکستان دل کی گہرائیوں سے ترکی کا شکرگزار ہے جس نے ہمارا کشمیر پر مؤقف اور فنانشنل ایکشن ٹاسک فورس سمیت این جی ایس ممبر شپ میں ساتھ دیا ،ترکی نے اقوام متحدہ کے اجلاس میں کشمیر ورکنگ گروپ میں شمولیت کی دعوت قبول کرکے تعاون کی یقین دہانی کرائی ہے۔ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ پاکستان اور ترکی کے درمیان تعلقات کی خوبصورتی کی نوعیت عوامی سطح پر ہے،یہ تعلقات صرف حکومتوں تک نہیں بلکہ دونوں ملکوں کے عوام کے دلوں کی آواز ہے کیونکہ اس کے پیچھے دونوں ملکوں کے درمیان مذہب اور ثقافت سمیت مختلف چیزوں پر ایک آواز جیسے تعلقات ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مذاکرات میں دوطرفہ تعلقات ،دفاعی تعاون میں وسعت ،معاشی تعلقات بڑھانے اور دوطرفہ تجارت میں خاطر خواہ اضافے سمیت مختلف شعبوں پر تبادلہ خیال ہوا ہے۔ علاوہ ازیں ترک وزیر خارجہ نے صدر مملکت عارف علوی، وزیراعظم عمران خان اور آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے ملاقات کی ۔ ملاقات میں پاک ترک دوطرفہ تعلقات اور باہمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ انہوں نے پاکستان کی سول اور عسکری قیادت کو اپنی قیادت کی جانب سے پاکستان کی نئی حکومت کے ساتھ مل کر کام کرنے کی خواہش کا اظہار کیا اور صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی کو ترکی کے دورے کی دعوت دی ۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ

جواب چھوڑ دیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.