امریکا سے تجارتی جنگ پر اردوان کا پیوٹن سے رابطہ

31

انقرہ (انٹرنیشنل ڈیسک) امریکا نے چین اور روس کے بعد ترکی سے بھی تجارتی جنگ چھیڑ دی ہے۔ امریکا نے ترکی کے اسٹیل اور ایلومونیم پر ٹیرف دگنا کردیا ہے، جب کہ ترکی نے امریکا کو جوابی اقدامات کی دھمکی دی ہے۔ اس تناظر میں ترک صدر رجب طیب اردوان نے اپنے روسی ہم منصب ولادیمیر پیوٹن سے ٹیلی فون پر رابطہ کیا ہے۔ دونوں رہنماؤں نے اقتصادی اور تجارتی تعلقات پر بات کی۔ دوسری جانب ترک وزارتِ خارجہ کے ترجمان حامی آق سوئے نے کہا ہے کہ امریکا کے صدر دونلڈ ٹرمپ کی جانب سے ترکی پر اسٹیل اور ایلومونیم پر لگائی جانے والے اضافی محصولات پر ردعمل میں کہا ہے کہ عالمی تجارتی اصولوں کی پروا کیے بغیر ترکی کی اسٹیل اور ایلومونیم پر اضافی محصول لگانا ایک مہذب ملک کو زیب نہیں دیتا۔ انہوں نے کہا کہ امریکا کی جانب سے لگائی جانے والی پابندیوں سے کوئی بھی نتیجہ حاصل نہیں کیا جاسکے گا، بلکہ اس سے دونوں اتحادی ممالک کے تعلقات پر منفی اثرات مرتب ہوں گے۔ امریکا کو اس کے اقدامات کا بالکل اسی طرح جواب دیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ ترکی ہمیشہ ہی تمام مسائل کو سفارتی مذاکرات کے ذریعے حل کرنے پر یقین رکھتا ہے۔ ادھر صدارتی ترجمان ابراہیم قالن نے کہا ہے کہ کسی قسم کی بلیک میلنگ اور دھمکی ترکی کے عزم کو متزلزل نہیں کرسکتی۔ انہوں نے یہ بیان ترک کرنسی کی قدر میں کمی سے متعلق ٹوئٹر پر دیا۔
اردوان پیوٹن رابطہ

Print Friendly, PDF & Email
حصہ

جواب چھوڑ دیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.