۔800 مہاجر سرحدی باڑ کاٹ کر اسپین کی سرحد میں داخل

89
سبتہ: تارکین وطن سرحدی باڑ پر چڑھے ہوئے ہیں‘ ہسپانوی پولیس نے ملک میں داخل ہونے والے افریقی نوجوانوں کو حراست میں لے رکھا ہے
سبتہ: تارکین وطن سرحدی باڑ پر چڑھے ہوئے ہیں‘ ہسپانوی پولیس نے ملک میں داخل ہونے والے افریقی نوجوانوں کو حراست میں لے رکھا ہے

میڈرڈ (انٹرنیشنل ڈیسک) سیکڑوں افریقی تارکین وطن مراکش کے راستے شمالی افریقا میں اسپین کے زیرقبضہ علاقے سبتہ میں داخل ہونے میں کامیاب ہو گئے۔ تاہم اس کے لیے ان مہاجرین کو مراکش اور سبتہ کے درمیان مضبوط سرحدی باڑ کو آریوں اور قینچیوں سے کاٹنا پڑا۔ اسپین کی وزارت داخلہ نے بتایا کہ جمعرات کے روز تقریباً 800 مہاجرین نے سرحدی باڑ کاٹ کر اسپین کی سرحد میں داخل ہونے کی کوشش کی۔ پولیس کی مداخلت پر ان تارکین وطن نے مزاحمت کرتے ہوئے غلاظت سے بھری پلاسٹک کی بوتلیں اور آتش گیر مواد پھینکا۔ یاد رہے کہ رواں برس جون میں وزیر اعظم پیڈرو سانچیز کے وزارت عظمی کا منصب سنبھالنے کے بعد سے اسپین میں مہاجرت ایک سنگین سیاسی مسئلہ بن گیا ہے۔ سانچیز نے وزیراعظم بننے کے فوراً ہی بعد ایک این جی او کے بحری جہاز پر موجود 600
تارکین وطن کو اس وقت اسپین میں داخلے کی اجازت دی تھی جب مالٹا اور اٹلی کی حکومتوں نے ان مہاجرین کو قبول کرنے سے انکار کر دیا تھا۔ اسپین میں غیر قانونی مہاجرت میں گزشتہ ایک برس میں مسلسل اضافہ ہوا ہے اور حالیہ چند ہفتوں میں گرم موسم کی آمد کے ساتھ ہی سمندر کے راستے اسپین پہنچنے والے پناہ گزینوں کی تعداد بھی بڑھ گئی ہے۔ اسپین میں حکام اور امدادی تنظیموں کا کہنا ہے کہ مہاجرین کی آمد میں حالیہ اضافے کی وجہ سے ان کے لیے رہایش کا بندوبست اور پناہ کے عمل پر کارروائی مشکل ہوتی جا رہی ہے۔ اس کے علاوہ کوسٹ گارڈ یونین نے بھی اس بہاؤ سے نمٹنے کے لے حکومت سے اضافی اقدامات کا مطالبہ کیا ہے۔ اسپین کی حکومت نے بدھ کے روز پولیس، امدادی تنظیموں اور فلاحی اداروں کے ساتھ ایک ہنگامی اجلاس کیا تھا، تاکہ حال ہی میں اندلوسیا پہنچنے والے 400 مہاجرین کے لیے ہنگامی بنیادوں پر رہایش کا بندوبست کیا جا سکے۔ اسپین کے بندرگاہی شہر خضرا کی سٹی کونسل کے ترجمان نے بتایا کہ رواں ہفتے ان 200 مہاجرین کو انہی امدادی کشتیوں پر رات گزارنی پڑی تھی، جن پر انہیں بچا کر لایا گیا تھا، کیوں کہ ان کی رہایش کے لیے ہمارے پاس کوئی جگہ نہیں تھی۔ اسی طرح افریقی مہاجرین ایک اور سرحدی مقام میلیا کی سرحد کو بھی عبور کرنے کی کوشش میں بھی رہتے ہیں۔ میلیا اور سبتہ کی سرحدی باڑوں کی حفاظت کے لیے ہر وقت مراکشی اور ہسپانوی گارڈز تعینات رہتے ہیں۔ یہ سمندر سے ہٹ کر انسانی اسمگلنگ کا ایک راستہ ہے۔ سبتہ اسپین کا ایک خود مختار شہر ہے، جو شمالی افریقا میں واقع ہے۔
مہاجر/ اسپین

Print Friendly, PDF & Email
حصہ