ستائیس دسمبر تک مطالبات پورے نہ ہونے پر ملک گیر لانگ مارچ ہوگا،بلاول بھٹو

117
نواز کے بعد شہباز کی صدرات بھی خطرے میں ہے ، بلاول
نواز کے بعد شہباز کی صدرات بھی خطرے میں ہے ، بلاول

پیپلزپارٹی کے چےئر مین بلاول بھٹو نے27دسمبر تک4مطالبات پورے نہ ہونے پر ملک گیر لانگ مارچ کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ دنیامیں پانامہ میں نام آنیوالے وزراء اعظم کا احتساب ہوا ہے مگرہمارا وزیر اعظم قطری شہزادے کے خط کے پیچھے چھپ رہا ہے‘ 27دسمبر کے بعد بلاول ہاؤس لاہور سے ہی سیاست ہوگی ‘ہم 3 مہینے گونوازگو کا نعرہ لگائیں گے اور اگلے تین ماہ انتخابی ہم چلائیں گے۔

 وہ بلاول ہاؤس میں پارٹی کے یوم تاسیس کی 6روز اختتامی تقریب سے خطاب کر رہے تھے جبکہ اس موقع پر اپوزیشن لیڈر سید خورشید شاہ ،سابق وزیر اعلی سندھ سید قائم علی شاہ، آصفہ بھٹو،بختاور بھٹو،فر یال تالپور،سینیٹر اعتزاز احسن ،شیری رحمن ،ندیم افضل چن ،سابق وزیر اعظم راجہ پر ویز اشرف سمیت پیپلزپارٹی کے مر کزی صوبائی قائدین شر یک ہوئے۔

بلاول بھٹو نے کہا کہ میں یوم تاسیس کے اس پر وگرام کو کامیاب بنانے پر تمام صوبوں کے کارکنوں کا شکر یہ ادا کر تاہوں ،جیالوں نے شوباز شر یفوں اور ناکام شر یفوں کو دیکھا دیا ہے کہ پیپلزپارٹی زندہ ہیں اور میری سوچ میں ہیں کہ ہم تین مہینے گونوازگو کا نعرہ لگائیں گے اور 3ماہ میں ہم انتخابی الیکشن جیت کر حکومت بنائیں میں شہید ذوالفقار بھٹو کا نواسا اور بی بی شہید کا بیٹا یہاں سیاست کر نے نہیں جمہو ری قبضہ کر نے کیلئے آیا ہے اگر تخت لاہور والے ہمارے مطالبات نہیں مانگیں گے 27دسمبر کے بعد لانگ مارچ ہو گا اور میاں صاحب کو سن بھی لینا چاہیے کہ بلو چستان ‘سندھ یا کسی اور جگہ سے نہیں تخت لاہور سے گو نواز گو کا نعرہ اٹھ رہا ہے ۔

 انہوں نے کہا کہ بھٹو شہید نے ملک کو جمہو ریت دی بے نظیر بھٹو شہید جمہو ریت واپسی لائی اور پورے ملک کو جمہو ریت دی مگر پنجاب میں شریفوں کا تخت لاہور کا ضیاء الحق کاآمر یت آج تک چل رہا ہے ہم نے شر یفوں کو سمجھنا ہے کہ یہ آپ کی آخری باری ہے ہم نے پھر سے آپ کی شکل اور آپ کا منہ نہیں دیکھنا اگر بلو چستان ،پنجابُ ،خیبر پختونخواہ، آزادکشمیر ہماراساتھ دیتے ہیں تو2018میں نوازشر یف کو خدا حافظ کہہ دیں گے آپ جیل میں ہوں گے یا آپ سعودی عرب میں ہوں گے مجھے پتہ نہیں آپ کہاں ہوگے مگر ’’شریف ‘‘اقتدار میں نہیں ہوں گے ۔

 انہوں نے کہا کہ جب سے بی بی کا بیٹا آیا تو سندھ اور پارٹی میں تبدیلی آئی ہے تو2018میں بھی ہم تبدیلی لا رہے ہیں شر یفوں کے شر یفستان کوحکمرانوں نے پورے ملک کو مقر وض کردیا 1لاکھ20ہزار کا ہر پاکستانی مقر وض ہیں ملک کی زراعت او ر کسان ختم ہو رہا ہے مگر تخت لاہور کی شاہ خر چیاں ختم ہو رہی ہے انڈسڑی بند ہو رہی ہیں زمین آباد ہونے کی بجائے بنجر ہو رہی ہے ملک معاشی طور پر تباہ ہو رہا ہے اور تیل کی قیمتوں میں کمی کا فائدہ نہیں ہو رہا ۔

 انہوں نے کہا کہ (ن) لیگ نے لوڈشیڈ نگ پر الیکشن لڑ ا لوڈشیڈ نگ ختم نہیں ہوئی تو مگر بجلی کی قیمتیں ڈبل کر دیں لوہے سے میٹروبنانے کے شوقین حکمرانوں نے سکولوں میں کچھ نہیں ہسپتالوں میں ڈاکٹرز ہڑ تال پر رہے کہاں ہے سستا تندور کہاں ہے آپ کا آشیانہ قوم کیساتھ اتنا بڑ ا دھوکہ کیا ہے ان حکمرانوں نے ملک میں 2طبقات کو 10طبقات میں بدل کر دیا ہے حکمرانوں نے آنکھیں اور کان بند کی ہوئی ہیں رائے ونڈ کی خارجہ پالیسی نے ہمیں دنیا میں تنہا کر دیا ہے پاکستان کے وقار کو ہم نے متحد ہو کر بحال کر نا ہے ۔

 انہوں نے کہا کہ دنیا کا سب سے بڑ اپانامہ کر پشن سکینڈل ہے اور نوازشر یف کی وجہ سے پاکستان دنیا میں بدنام ہو رہا ہے دنیا میں جس وزیر اعظم پر پانامہ کا الزام لگا اس کا احتساب ہوا ہے مگر ہمارا وزیر اعظم قطری شہزادے کے خط کے پیچھے چھپ رہا ہے ان تمام مسائل کا حل ہمارے4مطالبات ہیں اگر نوازشر یف نیشنل ایکشن پلان ‘خارجہ پالیسی ‘سی پیک اور معاشی پالیسوں پرجمہو ری احتساب مانگتے ہیں ہم ان 4مطالبات پرکمیٹی بنا رہے ہیں اگر 27دسمبرتک مطالبات پورے نہ ہوئے تو ان کو جمہو ری طر یقے سے اقتدار کے ایوانوں سے ہٹائیں گے شر یفوں کے پاس پہلے تو کوئی اپوزیشن نہیں تھی جب ہم آئیں گے تو آپ کو لگ پتہ جائیگا کہ بھٹو کیا ہے 27دسمبر کے بعد سے میری ساری سیاست اور پارٹی سر گر میاں بلاول ہاؤس لاہور سے ہوں گی ۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ