لڑکی کی لاش کے ٹکڑے فریج میں رکھ کر ملزم کی دوسری لڑکیوں سے دوستیاں

214
 لڑکی کی لاش کے ٹکڑے فریج میں رکھ کر ملزم کی دوسری لڑکیوں سے دوستیاں

نئی دہلی:بھارتی دارالحکومت نئی دہلی میں شردھا نامی لڑکی کو قتل کر کے لاش کے ٹکڑے کرنے والے ملزم آفتاب پونا والا کے بارے میں مزید انکشافات سامنے آ گئے۔

بھارتی میڈیا کے مطابق دوست خاتون کو قتل کر کے لاش کے ٹکڑے کرنے والا آفتاب پونا والا ان دنوں بھی مختلف خواتین سے ملاقاتیں کرتا رہا جب مقتولہ شردھا کی لاش کے ٹکڑے اس کے فریج میں پڑے تھے۔

دہلی پولیس کا کہنا ہے کہ آفتاب پونا والا نے شردھا کو قتل کرنے کے بعد اسی ڈیٹنگ ایپ پر دیگر خواتین سے دوستیاں کیں، جس کے ذریعے آفتاب کی شردھا سے ملاقات ہوئی تھی۔

شردھا کے قتل کے بعد ڈیٹنگ ایپ پر آفتاب نے ایک خاتون ڈاکٹر سے دوستی کی، اسے اپنے فلیٹ پر بلایا، اس ملاقات کے موقع پر گھر کے فریج میں شردھا کی لاش کے ٹکڑے موجود تھے۔

آفتاب پونا والا پر مئی میں اپنی دوست شردھا کو تلخ کلامی کے بعد قتل کرنے کا الزام ہے، جرم چھپانے کے لیے آفتاب نے لاش کے 35 ٹکڑے کر کے فریج میں رکھے اور ایک ایک کر کے 18 دنوں میں شہر کے مختلف مقامات پر پھینکے۔

اس دوران پولیس نے ایک شخص کو حراست میں لیا جس نے اپنی ہندو شناخت چھپا کر خود کو مسلمان بتایا اور آفتاب کی حمایت کرتے ہوئے کہا کہ بندہ جب غصے میں ہو تو 35 کیا 36 ٹکڑے بھی کر سکتا ہے۔

خود کو راشد خان بتانے والے شخص کا بیان سامنے آنے پر پولیس نے اسے گرفتار کر لیا، پتہ چلا کہ اس کا اصل نام وکاس کمار ہے اور وہ قتل کی حمایت کر کے اور خود کو مسلمان ظاہر کر کے نفرت کو فروغ دینا چاہتا تھا۔

بھارتی میڈیا کے مطابق ملزم پولیس سے تعاون کر رہا ہے، ملزم نے لاش کے ٹکڑے پھینکنے کے مقامات کے نقشے بھی پولیس کو فراہم کیے ہیں۔