غیر متعدی بیماریاں عالمی سطح پر 74 فیصد اموات کا سبب ہیں،عالمی ادارہ صحت

163

جنیوا : عالمی ادارہ صحت نے کہا ہے کہ دل کی بیماری، کینسر اور ذیابیطس جیسی غیر متعدی بیماریاں عالمی سطح پر 74 فیصد اموات کی وجہ ہیں جب کہ ان بیماریوں کا باعث بننے والے عوامل پر قابو پاکر لاکھوں جانیں بچائی جا سکتی ہیں۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق اقوام متحدہ کے ادارہ صحت کی رپورٹ ظاہر کرتی ہے کہ نام نہاد این سی 4 کروڑ 10 افراد کی موت کی وجہ بنتی ہیں جب کہ مرنے والوں میں 70 سال سے کم عمر کے ایک کروڑ 70 لاکھ افراد بھی شامل ہیں۔

نان کمیونل ڈیزیز کو روکا جا سکتا ہے یہ بیماریاں اکثر غیر صحت مند طرز زندگی یا رہن سہن کے باعث ہوتی ہیں۔ پوشیدہ نمبرز کے عنوان سے تیار کی گئی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ دل ، کینسر، ذیابیطس اور سانس کی بیماریوں نے عالمی سطح پر ہلاکتوں کا باعث بننے کے لحاظ سے متعدی بیماریوں کو پیچھے چھوڑ دیا ہے۔

عالمی ادارہ صحت کے اس طرح کی بیماریوں کو دیکھنے والے ڈویژن ہیڈ نے جنیوا میں صحافیوں کو بتایا کہ ہر 2 سیکنڈ میں 70 سال سے کم عمر کوئی شخص این سی ڈی سے مر رہا ہے۔اس کے باوجود این سی ڈیز کے خلاف اقدامات کے لیے ملکی اور عالمی سطح پر بہت کم رقم خرچ کی جاتی ہے، یہ واقعی ایک المیہ ہے۔