محکمہ ثقافت سندھ کی جانب سے تین روزہ سندھ کرافٹس فیسٹیول کا افتتاح

253

کراچی(اسٹاف رپورٹر) صوبائی وزیر ثقافت و تعلیم سید سردار علی شاہ نے کہا ہے کہ محکمہ ثقافت سندھ کی جانب سے مستحق و بیمار فنکاروں کے لیے ہیلتھ کارڈ جاری کیے جا رہے ہیں۔

اردو بولنے والے ہمارے بھائی ہیں ہم کسی صورت صوبے میں بٹوارے کا سوچ بھی نہیں سکتے ہیں ایم کیو ایم کے ساتھ کسی قسم کا کوئی معاہدہ نہیں ہوا اور چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو نے واضح طور پر ایسے کسی بھی تاثر کو رد کیا ہے ۔

وزیر ثقافت و تعلیم سندھ سید سردار علی شاہ نے تین روزہ سندھ کرافٹس فیسٹیول کا کراچی پورٹ گرینڈ میں افتتاح کیا ہے ۔اس موقع پر سیکرٹری ثقافت نسیم غنی سہتو, فرانس اور دیگر ممالک کےقونصل جنرل, ڈی جی ثقافت عبدالعلیم لاشاری سمیت دیگر متعلقہ افسران اور عوام کی ایک بہت بڑی تعداد شریک تھی ۔

محکمہ ثقافت کی جانب سے کراچی پورٹ گرینڈ میں منعقد کیے گئے تین روزہ سندھ کرافٹس فیسٹیول میں ثقافتی دستکاری, سندھی رلی, گج, کاشی, چنری, اجرک ٹوپی اور دیگر ثقافتی اشیاء کی نمائش کے لیے 80 سے زاید اسٹالز لگائے ہیں۔

سندھ کرافٹس فیسٹیول میں کراچی کے علاوہ مٹیاری, جامشورو, بدین, عمرکوٹ, شکارپور, سکھر, دادو اور قمبر شہدادکوٹ سمیت سندھ کے مختلف اضلاع سے آئے ہوئے ہنرمندوں نے اپنی دستکاری نمائش میں پیش کیے۔

کراچی پورٹ گرینڈ میں جاری تین روزہ سندھ کرافٹس فیسٹیول کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیر تعلیم و ثقافت سید سردار علی شاہ نے کہا کہ دو تین برس پہلے مہتا پیلیس میں رلی کی نمائش کے انعقاد سے ہم نے سندھ کرافٹس فیسٹیول کا آغاز کیاتھا۔اس کے بعد رلی, گج اور سندھی ٹوپی کے فروغ کے لیے نیشنل میوزیم میں سندھ کرافٹس فیسٹیول کا انعقاد کیا گیا. اور اب سال یہ تین روزہ کرافٹس فیسٹیول پورٹ گرانڈ میں منعقد کیا ہے تاکہ سندھ کے ہنرمندوں کی دستکاری کو مارکیٹ کی جاسکے۔

. ایک سوال کے جواب میں سید سردار علی شاہ نے کہا کہ رواں سال سے آخر تک موہن جو دڑو کی صدسالہ تقریبات یونیسکو کے ہیڈکوارٹر پیرس فرانس میں منعقد کی جائے گی جس سے عالمی سطح پر سندھ کے ہینڈی کرافٹس اور موسیقی سمیت سندھ کی ثقافت کو فروغ ملے گا۔

انہوں نے کہا کہ جلد ہی محکمہ تعلیم میں موسیقی اور ویجوئل آرٹ سکھانے کے لیے اساتذہ مقرر کیے جائینگے. اٹھارویں آئینی ترمیم کے بعد ثقافت کا مضمون صوبوں کو ملا تو ، حالیہ برسوں میں سندھ حکومت کے محکمہ ثقافت کی طرف سے لندن, کینیڈا, دبئی اور مصر تک سندھ کے ثقافتی تقریبات کا انعقاد کیاگیا ہیں۔

ایک سوال کے جواب میں سید سردار علی شاہ نے کہا کہ محکمہ ثقافت سندھ کی جانب سے مستحق و بیمار فنکاروں کو ہیلتھ کارڈ جاری کیے جا رہے ہے. سندھ کے دور دراز علاقوں سے سندھ کے ثقافتی دستکاری کو یہاں لایا گیا ہے جوکہ یہ ثابت کرتا ہے کہ سندھ ثقافتی تخلیقکاری سے مالامال ہے۔

ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ پورے صوبے میں سندھ انسٹی ٹیوٹ آف میوزک اینڈ فارمنگ آرٹ کے کیمپس کھولینگے۔

انہوں نے کہا کہ جہاں استاد نہیں یا اسکول نہیں چل سکتا ہے،اسکو ہارڈ ایریا قرار دیا گیا. کاچھو اور کوہستان سمیت ہر ہارڈ ایریا کے تمام اسکولز کھولیں گے اور بچوں کو تعلیم دینگے۔محکمہ تعلیم سندھ کی جانب سے بنائی گئی کمیٹی کے فیصلے کے تحت آئی بی اے کے سوالنامے میں غلطیوں کے ازالے میں امیدواروں کو گریس مارکس د یے گئے ہیں جس سے اب مزید 11 سو امیدوار پاس ہوگئے ہیں ۔

محکمہ ثقافت کی جانب سے عوام کی تفریح کے لیے تینوں روز ثقافتی نمائش کے ساتھ ساتھ محفل موسیقی کے پروگرامز بھی رکھے گئے ہیں جن میں نامور فنکاروں اپنے فن کا مظاہرہ کریں گے۔