عدالتی فیصلوں پر اثرانداز ہونے کی جسارت نہیں کر سکتے، شہباز گل

135

اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان کے معاون خصوصی برائے سیاسی روابط شہباز گل نے کہا ہےکہ عدالتی فیصلوں پر اثرانداز ہونے کی جسارت نہیں کر سکتے، ن لیگی رہنماؤں نے جھوٹ بولا، عدالت کے فیصلے سے پہلے ہی درخواست ضمانت منظور کیے جانے کا شور کر دیا، شہباز شریف کی ضمانت نہ ہونے پر اب یہ لوگ رو رہے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے معاون خصوصی برائے سیاسی روابط کا کہنا تھا کہ پی ٹی آئی کسی پر اثر انداز ہونے کی کوشش نہیں کرتی، تمام عدالتوں کے فیصلوں کا احترام کرتی ہے، میں مسلم لیگ (ن) کی قیادت کا اپنے جھوٹ پر رونا پیٹنا دیکھ رہا ہوں۔

انہوں نے کہا کہ شہباز خاندان کے پاس 1998  ء میں ڈیڑھ کروڑ روپے تھے، 10سال میں 7ارب 32کروڑ روپے سے زیادہ بنالیے، اتنی تو زندگی بھی نہیں جتنا شہباز شریف نے پیسہ بنایا ہے۔

انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ نون سمجھ رہی ہے شہباز شریف کے ساتھ بہت بڑا ظلم ہوا ہے، مریم اورنگزیب نے عدالت کے فیصلے پر تشویش کا اظہار کیا ہے، شہباز شریف کے پاس ایم بی بی ایس یعنی میاں بیوی بچوں سمیت ڈگری ہے۔

وزیراعظم کے معاون خصوصی  کا مزید کہناتھاکہ عدالتی فیصلے پر ن لیگ کے ترجمانوں نے جھوٹ بولا، شرم کی بات ہے، یہ لوگ کرائم کیلیے عورتوں کے نام استعمال کرتے ہیں جبکہ شہبازشریف کو شرم آنی چاہیے خواتین کے نام پر بھی ٹی ٹی لگوائیں ، نصرت شہباز کے نام پر 26 جعلی ٹی ٹی لگوائیں۔

انہوں نے کہا کہ شہباز شریف سے زیادہ 1103ضعیف لوگ پنجاب کی جیلوں میں ہیں، بزرگ کا مسئلہ ہے تو ن لیگ دیگر ضعیف لوگوں کی بھی ضمانت کرائے ،  2001 میں حمزہ شہباز کے اثاثے ایک کروڑ 80 لاکھ تھے، 2018 میں شہباز شریف کے اثاثے 2259 ملین روپے کے تھے، شہبازشریف نے جعلی ٹی ٹی کے ذریعے1.1ارب روپے حاصل کیے جبکہ زراعت کے شعبے میں کوئی پوچھنے والا نہیں کہ اتنی زمین سے آپ نے اتنا پیسہ کیسے بنایا ہے۔