مہنگائی کا طوفان تھمنے والا نہیں ،بیروزگاری سے انارکی پھیلنے کا خدشہ ہے‘سراج الحق

334

دیر(نمائندہ خصوصی) امیر جماعت اسلامی پاکستان سراج الحق نے کہاہے کہ مہنگائی کا طوفان تھمنے کانام نہیں لے رہا ۔ اگر حکومت اسی طرح عوامی مسائل سے آنکھیں چراتی رہی تو آنے والے دن مزید کٹھن ہوں گے ۔ رمضان کے مبارک مہینے میں اشیائے خورونوش کی قیمتوں میں 50 فیصد کمی کی جائے ۔ کورونا ویکسین کا ایمر جنسی بنیاد پر انتظام ہونا چاہیے۔ حکومت آئی ایم ایف کے سامنے مکمل سرنڈر نہ کرے ۔ادارے بیچنے سے ملکی مسائل کم نہیں ہوں گے ۔ تنزلی کا اصل ذمے دار حکمران طبقہ ہے ۔ وسائل کی منصفانہ تقسیم ممکن بنا کر ہی استحکام پاکستان کی منزل حاصل کی جاسکتی ہے ۔ خیبر پختونخوا مسائل کی آماجگاہ بن چکا ہے ۔ لاکھوں نوجوان بے روزگار اور غربت انتہا کو پہنچ چکی ہے ۔ ذرائع روزگار میں اسی طرح کمی ہوتی رہی تو انارکی پھیلے گی ۔ خیبر پختونخوا میں انفرااسٹرکچر کی بہتری ، تعلیم و صحت کے شعبوں میں انقلابی پروگرامز متعارف کرانے کی ضرورت ہے جو موجودہ حکومت کے بس کی بات نہیں۔ نوجوان مایوس ہورہے ہیں ۔ جماعت اسلامی ایک واضح پروگرام کے ساتھ جدوجہد کر رہی ہے ۔ ہمارا مقصد ملک میں خوشحالی لاناہے ۔ اسلام کے زریں اصولوں پر عمل پیرا ہو کر ہی دنیا و آخرت کی کامیابی ممکن ہے ۔ پاکستان ایک عظیم خواب تھا مگر وہ منزل حاصل نہ ہوسکی جس کے لیے جدوجہد کی تھی ۔ قوم اسلامی انقلاب کے لیے ہمار ی ہم قدم بنے ۔ ان خیالات کااظہار انہوں نے تیمر گرہ میں استحکام پاکستان کنونشن اور مدرسہ تفہیم القرآن خانپور دیر پائن میں تقریب تقسیم اسناد سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ جماعت اسلامی کے سابق ایم این اے صاحبزادہ یعقوب اور ضلعی امیر اعزاز الملک افکاری بھی اس موقع پر موجود تھے ۔سراج الحق نے کہاکہ کم از کم ماہ رمضان المبارک میں وفاقی ، صوبائی و ضلعی حکومتیں عوام کو ریلیف پہنچانے کے اقدامات کریں ،اس سلسلے میں ہنگامی بنیاد پر کام کرنے کی ضرورت ہے ۔ انہوںنے کہاکہ غربت اور بے روزگاری کی وجہ سے عوام قوت خرید کھو چکے ہیں ۔ حکومت کی نااہلی اور ناتجربہ کاری کی وجہ سے پہلے سے کمزور معیشت مکمل طور پر تباہی کے دہانے پر پہنچ چکی ہے ۔ پی ٹی آئی نے تبدیلی کے بڑے بڑے دعوے کیے تھے مگر اقتدار میں آنے کے بعد اس نے وہی کام کیے جو سابق حکومتیں کرتی آئی ہیں ۔ڈھائی برس میں ہی حالات اس نہج پر پہنچ چکے ہیں کہ عوام جھولیاں اٹھا اٹھا کر اس حکومت کی رخصتی کے لیے دعائیں کر رہے ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ ملک کو مسائل کی دلدل سے نکالنے کے لیے قوم کو متحد ہو کر کرپٹ نظام اور اس کو تحفظ دینے والوں کے خلاف جدوجہد کرنا ہوگی ۔ بوسیدہ اور کرپٹ نظام سے جان چھڑا نے کے لیے اور ملک میں عام آدمی کے حقوق کے تحفظ کے لیے ایک منظم جدوجہد کی ضرورت ہے ۔سراج الحق نے کہاکہ پاکستان کا استحکام اسی صورت ممکن ہے جب کمزور طبقات ، کسان ، مزدور ، طالبعلم ، استاد متحد ہو کر جدوجہد کا آغاز کریں گے ۔ انہو ں نے کہاکہ 73 برس سے آزمائے ہوئے لوگوں کو آزمانے کے بعد عوام کو کافی حد تک یقین ہوگیا ہے کہ جاگیردار اور سرمایہ دار اسی طرح ان کی گردنوں پر مسلط رہے تو ملک ترقی نہیں کرسکتا ۔ انہو ںنے کہاکہ ملک میں اسلامی اور پائیدار جمہوری انقلاب کے لیے عوام جماعت اسلامی کے پلیٹ فارم سے جدوجہد کریں۔