لڑکی کی لڑکی سے شادی،عدالت نے لڑکیوں کے حق میں فیصلہ سنا دیا

110

راولپنڈی (مانیٹرنگ ڈیسک ) راولپنڈی میں لڑکی سے لڑکی کی شادی کا معاملہ، کیس ختم ۔ عدالت نے لڑکیوں کے حق میں فیصلہ سنا دیا۔ جنس تبدیل کرنے کی دعویدار عاصمہ بی بی کا نام ای سی ایل سے نکالنے کا حکم۔ دوسری لڑکی نیہا کو اپنی مرضی سے کہیں بھی جانے کی اجازت دے دی۔ تفصیلات کے مطابق راولپنڈی میں لڑکی سے لڑکی کی شادی کے معاملے کا ڈراپ سین ہوگیا ہے۔عدالت نے جنس تبدیل کروا لینے کی دعویدار عاصمہ بی بی اور نیہا دونوں کے حق میں فیصلہ سنا دیا۔ ہائی کورٹ راولپنڈی بینچ نے راولپنڈی کی تحصیل ٹیکسلا سے تعلق رکھنے والی 2 لڑکیوں کی جانب سے آپس میں شادی کرنے کے معاملے پر مبینہ دلہے آکاش کا نام ای سی ایل میں ڈالنے کا فیصلہ واپس لے لیا ہے۔ جبکہ عدالت نے دوسری لڑکی نیہا کے حق میں بھی فیصلہ سنایا ہے۔عدالت نے مبینہ دلہن نیہا علی نامی لڑکی کو آزاد خود مختارشہری قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ یہ لڑکی اپنی مرضی سے کہیں بھی جا سکتی ہے۔ عدالتی فیصلے کے مطابق نیہا علی کو طویل عرصہ تک دارالامان رکھنے کا کوئی جواز نہیں ہے۔ قانون اور آئین کے مطابق نیہا علی کو حق حاصل ہے کہ وہ اپنی مرضی سے اپنے شوہر یا والدین کسی کے ساتھ بھی جا سکتی ہے۔ جبکہ عدالت نے کیس کی دوسری کردار عاصمہ بی بی کو یہ اجازت بھی دے دی ہے کہ وہ ٹرانس جینڈر ایکٹ کے تحت نادرا میں رجسٹریشن کرا سکتی ہے۔