مصر، لیبیا میں فوجی آپریشن  فوری ترک کردے، ترک صدر

329

استنبول: ترک صدر رجب طیب اردوان نے مصر کو جبردار کیا ہے کہ مصر، لیبیا میں فوجی آپریشن فوری  ترک کر دے۔

غیرملکی خبررساں ایجنسی کے مطابق  ترک صدر نے واضھ طور پر مصر کو دھمکی دی ہے کہ “مصر، لیبیا میں کسی بھی طرح کی خوش فہمی میں نہ رہے”، ترکی نے لیبیا کی صورتحال پہ نگاہ رکھی ہوئی ہے، کسی بھی ملک کو لیبیا کے اندر فوجی مداخلت کی اجازت نہیں دیں گے۔

طیب اردوان نے مشرق وسطیٰ پر واضح کیا کہ جب تک شام اور لیبیا میں امن، آزادی اور عوام کا اعتماد بحال نہیں ہوتا ترکی یہاں موجود رہے گا۔

ترک صدر مزید کہا کہ لیبیا میں امن قائم کرنے کے لیے ہر ممکن کوشش کریں گے، لیبیا میں باغی ملیشیا کے ذریعے حکومت کا تختہ الٹنے کے اقدام کو روکا ہے۔

قبل ازیں گزشتہ روز مصر کی پارلیمنٹ نے  ملک سے باہر فوج کو تعینات کرنے کی ایک دن قبل ہی منظوری دی ہے۔

دسری جانب غیر ملکی میڈیا کا کہنا ہے کہ ترک صدر کے اس فیصلے کے بعد لیبیا میں دونوں متحارب گروپس کی لڑائی میں مصر اورترکی براہ راست ایک دوسرے کے مد مقابل آسکتے ہیں۔

مصر کے صدر عبدالفتح السیسی نے لیبیا کے شہر سرت کو سرخ لکیر قرار دیتے ہوئے کہا تھا کہ اگر یہاں حملہ ہوا تو مصر کی فوج مغربی سرحد کی حفاظت کے لیے لیبیا میں داخل ہوگی۔