لائیو اسٹریمنگ رائٹس پر پی سی بی کی وضاحت

442

پاکستان کرکٹ بورڈ نےایک اخباری رپورٹ کی مکمل تردید کرتےہوئے دعویٰ کیاہے کہ پی سی بی نے ایک برطانوی کمپنی کو بیٹنگ رائٹس فروخت کیے۔

پاکستان کرکٹ بورڈ اس الزام کو مکمل طور پر رد اور مسترد کرتے ہوئے واضح کرنا چاہتا ہے کہ اس نے بیٹنگ رائٹس سے متعلق نہ کسی سے کوئی رابطہ یا معاہدہ کیا اور نہ ہی اس کے کسی بھی کمرشل پارٹنر کو کسی بھی صورتحال میں بیٹنگ رائٹس سے متعلق کسی بھی کمپنی سے کوئی معاہدہ یا رابطہ کرنے کی اجازت ہے۔

حقائق یہ ہیں کہ پی ایس ایل کے تین ایڈیشنز (2019 تا 2021) کی پاکستان سے باہر لائیو اسٹریمنگ کے حقوق ایک بین الاقومی کمپنی کے پاس ہیں۔ اس میڈیا پارٹنر نے منظوری کے لیے ایک مقررہ عمل سے گزرے بغیر ایک بیٹنگ کمپنی کو پی ایس ایل کی لائیو اسٹریمنگ کے حقوق فراہم کردئیے۔ جیسے ہی معاملہ پی سی بی کے نوٹس میں آیا ویسے ہی پی سی بی نے میڈیا پارٹنر سے رابطہ قائم کیا اور اس حوالے سے تبادلہ خیال جاری کیا ہے۔

جب اس حوالے سے مذکورہ اخبار نے گذشتہ ہفتے پی سی بی سے رابطہ کیا تو پی سی بی نے اس اخبار کو حقائق واضح کیے تاہم اس کی درست رپورٹنگ نہیں کی گئی۔