کورونا کے باعث پاکستان کا نام گرے لسٹ سے خارج کیا جائے ، رحمن ملک

102

اسلام آباد(آئی این پی)چیئرمین قائمہ کمیٹی برائے داخلہ سینیٹر رحمن ملک کا فنانشل ایکشن ٹاسک فورس(ایف اے ٹی ایف) کے صدر کو لکھے گئے خط میں پاکستان کا نام گرے لسٹ سے خارج کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایف اے ٹی ایف کے گرے لسٹ میں ہونے کی وجہ سے پہلے پاکستان کی معیشت کو شدید دھچکا لگا ہے، کورونا وائرس کی پھیلاو سے پاکستان کی معیشت کو لاحق خطرات کئی گنا بڑھ چکے ہیں۔سینیٹر رحمن ملک نے کہا کہ ایف اے ٹی ایف کی پابندیوں کے نتیجے میں کورونا وائرس کسی بھی ریاست کے کنٹرول سے باہر ہوسکتی ہے،کورونا وائرس کے خدشات کو مدنظر رکھ کر ایف اے ٹی ایف گرے لسٹ سے پاکستان کا نام فوری طور پر خارج کیاجائے،ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن(ڈبلیو ایچ او)پہلے ہی کورونا وائر س کو وبائی مرض قرار دے چکی ہے۔سینیٹر رحمن ملک نے کہا کہ عالمی برادری اس مہلک کورونا وائرس کی روک تھام کے لیے ہنگامی اقدامات اٹھا رہی ہے تاہم معاشی پابندیاں اس جان لیوا وائرس کے پھیلا ئوکے خلاف کوششوں میں یقینا رکاوٹ بنیں گی۔ رحمن ملک نے کہا کہ بدقسمتی سے پاکستان میں کوروناکے مریضوں کی تعداد میں تیزی سے اضافہ ہورہا ہے، وائرس کے نتیجے میں پاکستان میں صنعتیں بند ہو رہی ہیں اور کئی بڑے شہروں میں کاروباری سرگرمیاں روک گئیں ہیں، کورونا وائرس کے خطرات کے پیش نظر پاکستان جلد ہی مکمل طور پر لاک ڈائون کی طرف جا سکتا ہے۔