شہری پریشان ہیں خانہ داری کیسے چلے گی‘ حکومت سنجیدہ ہو‘ میئر کراچی

145

کراچی (نمائندہ جسارت)میئر کراچی وسیم اختر نے کہا ہے کہ وفاقی حکومت،صوبائی حکومت اور اسٹیٹ بینک ہنگامی معاشی پیکج کا اعلان کریں ، کورونا وائرس پر قابو پانے کے لیے تمام وسائل بروئے کار لائے جائیں ، یہ ایک انسانی سانحہ ہے، معاشی ، تجارتی، کاروباری اور نفع و نقصان کا معاملہ نہیں کم از کم شرح سود 9 سے 10 فیصد کرکے کاروبار اور تجارت کرنے والوں کی داد رسی کی جائے،اگر عوام کے جان و مال کی حفاظت کے لیے غیر ملکی قرضے بھی لینے پڑیں تو لیے جائیں، عام شہری بے انتہا پریشان ہے اس کا کچن کیسے چلے گا اس بات پر حکومت سنجیدگی اختیار کرے۔انہوں نے کہا کہ تاجر ہم سے رابطے میں ہیں اور حکومت سے امید ہے کہ ان کی مشکلات کو وہ آسان کریگی،ڈیلی ویجز والے سب سے زیادہ متاثر ہو رہے ہیں ، کورونا وائرس سے بچ جائیں گے تو انہیں اور ان کے خاندان کو بھوک افلاس، فاقہ کشی اور بے روزگاری مار ڈالے گی۔انہوں نے کہا کہ موجودہ صورتحال سے غریب، مزدور ،کسان،ڈیلی ویجز ، گھروں، کارخانوں، دفتروں ، دکانوں اور اسکولوں میں کام کرنے والے ورکرز ، ورکنگ کلاس اور مڈل کلاس طبقہ سب سے زیادہ متاثر ہوگا اس لیے ان کی داد رسی کے لیے اقدامات بے انتہا ضروری ہیں۔میئر کراچی وسیم اختر عباسی شہید اسپتال پہنچے اور کورونا وائرس کی روک تھام سے متعلق انتظامات کا جائزہ لیا۔ایمرجنسی وارڈ،کورونا وائرس کی ٹیسٹنگ کے حوالے سے بنائے گئے فلٹر کلینک اور آئسولیشن رومز کا دورہ کیا۔انہوں نے کہا کہ کورونا وائرس سے متعلق انتظامات خصوصی اہمیت کے حامل ہیں ، اسپتال کی انتظامیہ ، ڈاکٹرز اور پیرا میڈیکل اسٹاف اس سلسلے میں ہمہ وقت متحرک رہیں، کورونا وائرس کی روک تھام سے متعلق انتظامات میں کوئی کوتاہی براداشت نہیں کی جائے گی۔انہوں نے کہا کہ عباسی شہید اسپتال میں اس حوالے سے انتظامات مکمل ہیں اور اگر ضرورت پڑی تو مزید آئسولیشن رومز بنائے جائیں گے۔انہوں نے کہا کہ اسپتال میں داخل کرنے سے پہلے مریضوں کو فلٹر کلینک میں چیک کیا جائے ، خاص طور پر نزلہ ، زکام، کھانسی ، بخار اور سانس میں دشواری کے مریضوں کا کورونا وائرس سے متعلق ٹیسٹ لازمی طور پر کیا جائے اور ایسے افراد جو گزشتہ 15 روز میں مختلف ممالک سے پاکستان پہنچے ہیں ان کا بھی کسی قسم کا علاج کرنے سے پہلے فلٹر کلینک میں چیک اپ کیا جائے۔ میئر کراچی نے میڈیکل سپرنٹنڈنٹ کو ہدایت کی کہ تمام اسٹاف جو اسپتال میں کام کر رہا ہے انہیں ماسک اور سینیٹائزر فراہم کیے جائیں تاکہ وہ خود بھی محفوظ رہیں۔میئر کراچی نے کہا کہ یہ پوری دنیا کے لیے ایک مشکل وقت ہے لیکن جو قومیں ہمت اور جدوجہد سے کام لیں گی وہ بہت جلد اس مشکل سے نکل آئیں گی۔انہوں نے کہا کہ پوری دنیا اس سلسلے میں فکر مند ہے اور پاکستان میں بھی اس حوالے سے متعدد اقدامات کیے جارہے ہیں تاکہ جلد سے جلد صورتحال پر قابو پاسکیں۔