حج فارم میں تبدیلی کھلی قادیانیت نوازی ہے ، علما کرام

503

ٹنڈو آدم (پ ر) حج فارم میں تبدیلی کھلی قادیانیت نوازی ہے ،وزیرمذہبی امور کی شرارت ہے،حکومت کھل کر قادیانیت نوازی پر اترآئی یہی اسکے زوال کا سبب بنیگ،مسلمان سب کچھ برداشت کرسکتاہے قادیانیت نوازی نہیں ،قادیانی ہمارے خدا، رسولﷺ، قرآن، صحابہ کے گستاخ ہیں ان سے کوئی رعایت قبول نہیں کی جائیگی ،فوری طور پر حج فارم سابق طورپر بحال نہ کرنے کے خلاف تحریک چلائی جائیگی،تنظیم تحفظ ناموس خاتم الانبیاء پاکستان ،پاسبان ختم نبوت ،شبان ختم نبوت کے مرکزی راہنمائوں،مفتی محمد حسن لاہور،مفتی محمد طاہرمکی ٹنڈوآدم،صاحبزادہ محفوظ الرحمان شمس،قاری محمد عارف حیدر آباد، مولانا عبدالمجید ہالیجوی کوٹری، مولاناوہب اللہ پنو عاقل،مفتی سعودافضل ہالیجوی سکھر،ودیگر نے ملک بھر میں جمعہ کے اجتماعات سے خطاب میں کہا ہے کہ حج فارم میں ختم نبوت کا حلفنامہ جو بیت اللہ تک رسائی تک قادیانیوں کیلئے ایک دیوار تھی جسے حکومت نے ختم کرکے بدترین گستاخان رسول قادیانیوں کو حرمین تک جانیکی راہ ہموار کرکے دیدی ہے جسے مسلمان کسی بھی صورت میں قبول نہیں کریں گے یہ حکومت کی جانب سے کھلی قادیانیت نوازی ہے ،راہنمائوں نے کہا ہے کہ موجودہ حکومت آئے روز کسی نہ کسی طرح سے قادیانیوں کو فائدہ پہنچانے میں مصروف ہے ،ہمیشہ یہ ختم نبوت سے متعلق حلفنامہ پُر کرنے کے بعد ہی حج فارم مہیاکیا جاتاتھا لیکن موجودہ تمام بنکوں سے ملنے والے حج فارم میں یہ حلفانہ موجود نہیں جس سے ہمارے مئوقف کی مکمل تائید ہورہی ہیکہ یہ کھلی عمران خان کی قادیانیت نوازی ہے ،مفتی طاہرمکی نے کہا یہ ساری شرارت وفاقی مذہبی امور نورالحق قادری کی ہے یہ اس سازش میں برابر کے شریک ہی نہیں اس سازش کے قائد ہیں ،میری بات کو غلط ثابت کرنے کیلئے فوری بنیادوں پر حج فارم میں یہ بھیانک سازش کرنیوالوں کے خلاف وفاقی مذہبی امور نور الحق قادری ایکشن لے اور انہیں فوری طورپر سخت ترین سزادیں اور حج فارم کو سابقہ حیثیت میں بحال کرے بصورت دیگر میرامئوقف یہی ہیکہ لے دے کی بنیادوں پر نور الحق قادری اس سازش کا قائد ہے ،علماء کرام نے کہا ہیکہ ہرکافر کیساتھ رعایت ہوسکتی ہے اسلام نے بھی رعایت کا حکم دیاہے لیکن قادیانی بدترین گستاخ رسول ہیں اور رسول اللہ کے گستاخ کو بیت اللہ کے اندر بھی زندہ رکھنے کی اجازت خود رسول اللہ نے نہ دی اس قدر سنگین جرم ہے اہانت رسول ،اسلئے ہم کسی بھی قیمت پر قادیانیوں کیساتھ کوئی نرم رویہ اپنانے کو تیارنہیں ،حکومت اپنا شوق پورا کرلے بھٹو اور ضیاء کو بھی انکا شوق انکو لے ڈوبا اور قادیانیوں کو اللہ نے ان ہی کے ہاتھوں رسواکروایا اب عمران خان کی باری ہے۔