تجارتی و سرمایہ کاری تعلقات کو مـضبوط بنانا چاہتے ہیں،جاپانی قونصل جنرل

48
جاپان کے قونصل جنرل توشی کازو ایسو مورا کوصدر کراچی چیمبر آغا شہاب احمد خان شیلڈ پیش کررہے ہیں
جاپان کے قونصل جنرل توشی کازو ایسو مورا کوصدر کراچی چیمبر آغا شہاب احمد خان شیلڈ پیش کررہے ہیں

کراچی (اسٹاف رپورٹر)جاپان کے قونصل جنرل توشی کازو ایسو مورا نے کہا ہے کہ پاکستان اور افغانستان مل کر تقریباً250ملین آبادی کے ساتھ ایک بڑی مارکیٹ کی نمائندگی کرتے ہوئے جاپانی تاجربرادری کو تجارت وسرمایہ کاری کے وسیع مواقع کی پیش کش کرتے ہیں جو اس خطے میں اپنے کاروباری کو توسیع دینے کے خواہش مندہیں۔اس وقت مجموعی طور پر 80جاپانی کمپنیاں کامیابی کے ساتھ پاکستان میں کام کررہی ہیں لیکن یہ کچھ بھی نہیں اگر ہم اس کا موازنہ تھائی لینڈ اور چین سے کریں جہاں بالترتیب4500 اور17000 کے لگ بھگ جاپانی کمپنیاں کام کررہی ہیں۔ یہ بات انہوں نے کراچی چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری ( کے سی سی آئی ) کے دورے کے موقع پر کہی۔اجلاس میں کے سی سی آئی کے صدر آغا شہاب احمد خان،سینئر نائب صدر ارشد اسلام، نائب صدر شاہد اسماعیل اور منیجنگ کمیٹی کے اراکین بھی شریک تھے۔جاپانی قونصل جنرل نے بتایا کہ اگرچہ کئی جاپانی کمپنیوں کے بھارت میں پیداواری یونٹس موجود ہیںجو ایک بہت بڑی مارکیٹ ہے لیکن یہ کمپنیاں پاکستان اور بھارت کے مابین خراب تعلقات اور تناؤکی وجہ سے پاکستان کو اپنی اشیاء اور خدمات فراہم کرنے سے قاصر ہیں جو ایک مسئلہ ہے۔انہوں نے پاکستان میں کام کرنے والی کچھ اہم جاپانی کمپنیوں باالخصوص سوزوکی،ہنڈا، ٹویوٹا اور ہینو کے بارے میں تفصیلات سے آگاہ کیا جو آٹو موبائل کے شعبے میں کامیابی کے ساتھ اپنا کاروبار چلا رہی ہیں جبکہ نسان بھی جلد پاکستان سے اپنے کام کا آغاز کرنے والی ہے۔حال ہی میں جاپانی کمپنی مورنگا نے بھی شیخوپورہ میں اسٹیٹ آف دی آرٹ فیکٹری کا افتتاح کیا ہے جو مکمل طور پر کام کررہی ہے جبکہ ڈی آئی ڈی گروپ جاپان اٹلس ہنڈا کے ساتھ شراکت داری کے ذریعے پاکستان میں موٹرسائیکل کی چین کی پیداوار کے لیے فیکٹری قائم کررہاہے جبکہ مزید تین جاپانی کمپنیاں اپنے کاروباری یونٹس شروع کرنے پاکستان آرہی ہیں۔ انہوں نے کہاکہ ان کی خواہش ہے کہ پاکستان کے ساتھ تجارتی و سرمایہ کاری تعلقات کو مضبوط اور بہتر بنایا جائے اوراس سلسلے میں وہ پوری کوشش کررہے ہیں۔ جاپان 1952 سے پاکستان کے ساتھ شاندار تعلقات سے لطف اندوز ہورہاہے اور جاپان اس خطے میں اس سے پہلے سے کام کررہاتھا جب سندھ اور پنجاب خطے سے جاپان میں ٹیکسٹائل مصنوعات کی پیداوار کے لیے خام مال درآمد کیا جاتا تھا۔قبل ازیں کے سی سی آئی کے صدر آغا شہاب احمد خان نے جاپانی قونصل جنرل کا خیرمقدم کرتے ہوئے کہاکہ کراچی چیمبر معیشت کے مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والے تاجروصنعتکاروں کا میزبان اور مؤثر پلیٹ فارم ہے۔