انسداد دہشتگردی عدالت: ڈاکٹر پرویز محمود قتل کا مقدمہ دوبارہ کھل گیا

38

کراچی (اسٹاف رپورٹر) انسداد دہشت گردی کی عدالت میں جماعت اسلامی کے سابق ٹاؤن ناظم ڈاکٹر پرویز محمود کے قتل کا مقدمہ دوبارہ کھول دیا گیا، ملزم عبدالرحمان عرف رحمان قریشی ضمانت قبل ازگرفتاری حاصل کرکے عدالت میں پیش ہوگیا۔ پولیس نے مقدمے کا ضمنی چالان عدالت میں پیش کیا، عدالت نے ملزم کو مقدمے کی نقول فراہم کردیں، آئندہ سماعت پر ملزم پر فرد جرم عاید کی جائے گی۔ عدالت ملزمان مسعود عرف کالا، آصف عرف آلٹو اور بابر عرف موٹا کو پہلے ہی عدم ثبوت کی بنا پر بری کرچکی ہے۔ مفرور ملزمان میں عمران نیازی، طاہر قادیانی، زبیر عرف پپا، سابقہ سیکٹر انچارج فیصل، جوائنٹ سیکٹر انچارج ریحان، فیضان الیاس، سمیر نائی، شکیل موٹا شامل ہیں۔ پولیس کا الزام ہے کہ گرفتار ملزم نے ڈاکٹر پرویز محمود کی ٹارگٹ کلنگ کا اعتراف کیا ہے۔ ڈاکٹر پرویز محمود کو کے ڈی اے چورنگی کے قریب نشانہ بنایا، پرویز محمود کے ساتھ ان کے دوست خلیق اللہ بھی جاں بحق ہوئے۔ ملزمان نے اپنے ٹارگٹ کلر اسکواڈ کے ساتھ مقتولین کو نشانہ بنایا، ڈاکٹر پرویز محمود کا قتل کراچی تنظیمی کمیٹی کے انچارج حماد صدیقی کے کہنے پر کیا۔