الیکشن کمیشن کے2 ارکان کا تقرر، سندھ ہائیکورٹ کا فیصلہ جلد متوقع

56

کراچی (پ ر) الیکشن کمیشن کے دو ارکان کے تقرر کے سلسلے میں سندھ ہائی کورٹ کا فیصلہ جلد متوقع ہے۔ الطاف قریشی اور قیصر خاتون کے تقرر کیخلاف عام لوگ اتحاد نے عدالت سے رجوع کیا تھا۔ تفصیلات کے مطابق سیاسی جماعت عام لوگ اتحاد کے قائم مقام چیئرمین جسٹس (ر) وجیہ الدین نے سندھ ہائی کورٹ میں آئینی درخواست دائر کی تھی، جس میں یہ استدعا کی گئی تھی کہ الیکشن کمیشن کے دو ارکان جسٹس (ر) الطاف قریشی اور جسٹس (ر) قیصر خاتون کا تقرر آئین کے مطابق نہیں ہوا، کیونکہ یہ دونوں ہائی کورٹ کے جج رہ چکے ہیں اور آئین کی دفعہ 207(2) کے ماتحت ہائی کورٹ کا جج اپنی ریٹائرمنٹ کے دو سال کے عرصے میں کسی بھی سرکاری عہدے پر فائز نہیں ہو سکتا۔ تاہم ان دونوں ججز کا تقرر اس عرصے کے دوارن کر دیا گیا۔ کیس کی 15 سماعتیں سندھ ہائی کورٹ کی دو پنچوں نے یکے بعد دیگرے کیں۔ اس حوالے سے جسٹس عقیل عباسی کی سربراہی میں قائم بنچ نے دو ستمبر کو اپنا فیصلہ محفوظ کر لیا تھا۔ اس اثنا میں الیکشن کمیشن کے دونوں ارکان نے عدالت عظمیٰ میں درخواست دائر کی کہ اس کیس کو سندھ ہائی کورٹ سے اسلام آباد منتقل کیا جائے، کیونکہ الیکشن کمیشن اسلام آباد میں ہے۔ عام لوگ اتحاد نے مذکورہ درخواست کی مخالفت کی اور بتایا کہ الیکشن کمیشن کی عمل داری پورے پاکستان میں ہے، لہٰذا کسی بھی ہائیکورٹ میں یہ درخواست دائر کی جا سکتی ہے۔