قوانین سے لاعلمی‘ مسافر اہل خانہ سمیت 5گھنٹے حراست میں رہا

74

کراچی (اسٹاف رپورٹر) ائرپورٹ سیکورٹی فورس کی قوانین سے لاعلمی اور دیگر اداروں کے کام میں مداخلت کی وجہ سے دبئی سے بذریعہ کراچی دوہا جانے والا مسافراپنے اہل خانہ کے ساتھ 5 گھنٹے تک بے گناہ کراچی ائرپورٹ پر حراست میں رہا ۔ بعد ازاں امیگریشن اور کسٹم حکام کی جانب سے مداخلت پر بمشکل مسافر اور اس کے اہل خانہ کو
کراچی سے پرواز کرنے کی اجازت دی گئی ۔ دبئی اور قطر کے مابین سفارتی تعلقات نہ ہونے کی بناء پر سونے کے پاکستانی تاجر نے دبئی سے کراچی اور کراچی سے دوہا جانے کا انتخاب کیا ۔ مسافر کے ہمراہ اس کی بیوی ، 3 ماہ کی بچی اور بوڑھے والد بھی تھے۔ مسافر کے پاس چونکہ پاکستانی پاسپورٹ تھا اس لیے اس نے کراچی اترنے کے بعد امیگریشن کرائی اور دوبارہ جانے کے لیے ڈپارچر لاؤنج میں پہنچا۔ اسکریننگ مشین پر سونے کے زیورات آنے پر اے ایس ایف کے حکام نے اسے حراست میں لے لیا ۔ مسافر کی جانب سے دستاویزی ثبوت دکھانے ، کسٹم حکام اور امیگریشن حکام کی جانب سے اے ایس ایف اہلکاروں کو سمجھانے کے باوجود اے ایس ایف کے افسران و اہلکار مذکورہ مسافر اور اس کے اہل خانہ کو چھوڑنے پر تیار نہیں ہوئے ۔ اے ایس ایف حکام مذکورہ مسافر 8 کلو سونے کی اسمگلنگ کا الزام عائد کرنا چاہتے تھے ۔ اے ایس ایف حکام یہ ماننے پر تیار ہی نہیں تھے کہ مذکورہ مسافر ٹرانزٹ مسافر ہے مسافر کا موقف تھا کہ وہ پاکستانی شہری ہے اور گذشتہ چالیس سال سے قطر میں سونے کے زیورات کا کاروبار کر رہا ہے ، قطر اور یواے ای کے درمیان سفارتی تعلقات نہ ہونے کی وجہ سے اسے براہ راست قطر کا ٹکٹ نہیں ملا ۔ اس لیے وہ کراچی کے راستے قطر جا رہا ہے۔ اس سلسلے میں اعلیٰ حکام سے بھی مشاورت کی گئی تب کہیں جاکر اس بے گناہ مسافر کو جانے کی اجازت ملی ۔ تاہم اس پورے قضیے میں یہ مسافر ، اس کی اہلیہ ، شیر خوار بچی اور بوڑھے والد گرفتاراور بھوکے پیاسے رہے ۔
5 گھنٹے حراست

Print Friendly, PDF & Email
حصہ